سعودی عرب اور قازخستان کے درمیان پُرامن جوہری تعاون کا سمجھوتا

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

سعودی عرب اور قازخستان کے درمیان جوہری توانائی کے پُرامن استعمال سے متعلق ایک سمجھوتا طے پا گیا ہے۔

اس سمجھوتے پر سعودی عرب کی جانب سے شاہ عبداللہ سٹی برائے جوہری اور قابل تجدید توانائی کے صدر ڈاکٹر ہاشم یمنی اور قازخ وزیر توانائی قنات بوزم بیوف نے دستخط کیے ہیں۔

دونوں ملکوں کے درمیان یہ سمجھوتا قازخستان کے صدر نور سلطان نذر اے بائیوف اور سعودی فرمانروا شاہ سلمان بن عبدالعزیز کے درمیان منگل کو مذاکرات کے بعد طے پایا ہے۔انھوں نے تمام شعبوں میں دو طرفہ تعلقات کو بڑھانے سے متعلق امور پر تبادلہ خیال کیا تھا۔

دونوں ملکوں میں مفاہمت کی ایک یادداشت اور تین سمجھوتے طے پائے ہیں۔مفاہمت کی یادداشت دونوں ملکوں کے درمیان زراعت اور مویشی بانی میں تعان سے متعلق ہے۔اس پر سعودی عرب کی جانب سے ماحول ،پانی اور زراعت کے وزیر عبدالرحمان الفاضلی اور قازخستان کے نائب وزیراعظم اور وزیر زراعت عسکر میرزاخ میتوف نے دستخط کیے تھے۔

سعودی عرب اور قازخستان نے ایک دوسرے کو مطلوب افراد کی بے دخلی اور قیدیوں کے تبادلے سے متعلق ایک سمجھوتے سے بھی اتفاق کیا ہے۔اس پر سعودی عرب کے نائب وزیر داخلہ عبدالرحمان الربیعان اور قازخ پراسیکیوٹر ژاقق آسانوف نے دستخط کیے تھے۔

قازخ صدر نور سلطان نذر اے بائیوف نے اسلامی تعاون تنظیم (او آئی سی) کے سیکریٹری جنرل ایاد مدنی اور اسلامی ترقیاتی بنک کے صدر بندر حجار سے بھی الگ الگ ملاقات کی تھی اور ان سے باہمی دلچسپی کے امور پر تبادلہ خیال کیا تھا۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں