.

"ایف بی آئی" کی توپوں کا رخ ایک بار پھر ہیلری کی طرف ؟

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

امریکی اخبار "واشنگٹن پوسٹ" کی رپورٹ کے مطابق ڈیموکریٹک صدارتی امیدوار ہیلری کلنٹن کے خلاف ای میل اسکینڈل میں "ایف بی آئی" کی تحقیقات دوبارہ شروع کرانے کا سہرا برطانوی اخبار " ڈیلی میل" کے سر ہے۔

امریکی اخبار نے بتایا ہے کہ ستمبر میں برطانوی ٹیبلائڈ میں شائع ہونے والے مواد نے امریکی ایف بی آئی کو تشویش میں ڈال دیا۔

"ڈیلی میل" نے گزشتہ ماہ اپنی رپورٹ میں کہا تھا کہ ہیلری کلنٹن کی قریب ترین بھارتی نژاد خاتون معاون (ہما عابدین) کے شوہر " اینتھونی وینر نے کئی ماہ تک انٹرنیٹ کے ذریعے ایک 15 سالہ لڑکی کے ساتھ جنسی نوعیت کا تعلق قائم رکھا "۔

" ڈیلی میل" میں اس رپورٹ کے شائع ہونے سے کچھ ہفتے قبل امریکی اخبار "نیویارک پوسٹ" نے سابق رکن کانگریس وینر اور ایک 40 سالہ مطلقہ خاتون کے درمیان تبادلے میں بھیجے جانے والے پیغامات کا متن اور وینر کی برہنہ تصاویر پیش کر دی تھیں۔

اس کے نتیجے میں ہیلری کی سینئر معاون ہما عابدین نے اپنے شوہر سے علاحدگی کا مطالبہ کر دیا تھا۔

"ڈیلی میل" نے وینر کے اس کم عمر لڑکی کے ساتھ اسکینڈل سے متعلق رپورٹ کو دوبارہ نشر کیا جس کے سبب ہما عابدین کے شوہر کی جانب سے کم عمر لڑکی کے ساتھ جنسی پیغامات کے تبادلے نے ایف بی آئی کی توجہ حاصل کر لی۔

"واشنگٹن پوسٹ" کی رپورٹ کے مطابق ایف بی آئی کی جانب سے مذکورہ پیغامات کی تحقیقات کے دوران وینر اور ان کی اہلیہ ہما کے مشترکہ کمپیوٹر کا معائنہ کیا گیا جس پر اتفاقی طور پر ایف بی آئی کی سابقہ تحقیقات سے متعلقہ ای میلز سامنے آ گئیں۔ یہ سابقہ تحقیقات ہیلری کلنٹن کے وزیر خارجہ ہونے کے دور میں ہیلری اور ان کے سینئر معاونین کا خفیہ ای میلوں کے ساتھ اپنایا جانے والا طریقہ کار جاننے کے لیے کی گئی تھیں۔

اس وجہ سے ایف بی آئی نے ایک مرتبہ پھر اس کیس کی تحقیقات کرنے کا فیصلہ کیا ہے جس کو ہیلری پر کوئی الزام عائد کیے بغیر ہی بند کیا جا چکا تھا۔

تاہم ایف بی آئی کی جانب سے کیس پر نظر ثانی کے اعلان میں صاف طور پر ہما عابدین اور اینتھونی وینر کے کمپیوٹر اور اسکینڈل کی آخری تحقیقات کی طرف اشارہ نہیں کیا گیا بلکہ بیورو نے بتایا ہے کہ اسے ایسی " ای میلوں کی اطلاع ملی ہے جو لگتا ہے کہ تحقیق سے قریبی تعلق رکھتی ہیں"۔

امریکی سرکاری ذرائع کے مطابق مذکورہ ای میلیں علاحدہ تحقیقات کے دوران ایک دوسرے سرور پر ملی ہیں۔

واضح رہے کہ ایف بی آئی کی نئی تحقیقات کا اعلان امریکا میں 8 نومبر کو ہونے والے صدارتی انتخابات سے محض 10 روز پہلے سامنے آیا ہے۔ ڈونلڈ ٹرمپ نے اس اعلان کا بھرپور خیر مقدم کیا ہے۔ وہ مذکورہ اسکینڈل کے ذریعے اپنی حریف ہیلری کلنٹن کو بھاری نقصان سے دوچار ہوتا دیکھنا چاہتے ہیں تاکہ سروے رپورٹوں میں ٹرمپ پر برتری کی حامل سابق وزیر خارجہ کی وہائٹ ہاؤس کی جانب پیش قدمی روکی جا سکے۔