سعودی عرب : اسٹیڈیم کے باہر دہشت گردی کے حملے کی سازش ناکام

جدہ اور شقراء میں حملوں کی سازش کے الزام میں دو پاکستانیوں سمیت آٹھ مشتبہ دہشت گرد گرفتار

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

سعودی عرب کی وزارت داخلہ نے جدہ میں الجوہرہ فٹ بال اسٹیڈیم کے نزدیک تین ہفتے قبل دہشت گردی کے ایک حملے کی سازش ناکام بنانے کی اطلاع دی ہے اور کہا ہے کہ سعودی سکیورٹی فورسز نے آٹھ مبینہ دہشت گردوں کو گرفتار کر لیا ہے۔ دہشت گرد بارود سے بھری اپنی کار کو اسٹیڈیم کے باہر دھماکے سے اڑانا چاہتے تھے۔

وزارت داخلہ کا کہنا ہے کہ اس کو سعودی عرب اور متحدہ عرب امارات کے درمیان 2018ء میں کھیلے جانے والے عالمی کپ فٹ بال ٹورنا منٹ کے کوالیفائی میچ کے دوران دہشت گردی کے ممکنہ حملے کی قابل اعتبار اطلاع ملی تھی ۔

دہشت گردوں نے اسٹیڈیم کے باہر گاڑیاں کھڑی کرنے کی جگہ پر بارود سے بھری کار کو دھماکے سے اڑانے کی منصوبہ بندی کی تھی لیکن پولیس نے اس سازش کو ناکام بنا دیا تھا اور ان حملہ آوروں کو اس کار کو دھماکے سے اڑانے سے روک دیا تھا۔

وزارت داخلہ کا کہنا ہے کہ اس ناکام حملے کے الزام میں دو پاکستانیوں ،ایک شامی اور ایک سوڈانی کو گرفتار کر لیا گیا ہے۔

درایں اثناء وزارت داخلہ نے یہ بھی اطلاع دی ہے کہ سکیورٹی فورسز نے سعودی عرب کے وسطی صوبے شقراء میں دہشت گردی کے ایک سیل سے تعلق رکھنے والے چار مشتبہ سعودیوں کو گرفتار کر لیا ہے۔

یہ سیل شام میں داعش کے ایک لیڈر کے ساتھ رابطے میں تھا اور دہشت گردی کی سرگرمیوں کے لیے اس سے ہدایات وصول کر رہا تھا۔ان گرفتار کیے گئے مشتبہ دہشت گردوں کے نام یہ ہیں:حمد بن محمد بن حمود المعيلی،عبدالله بن عبيد بن محماس العصيمی العتيبی،عبدالعزيز بن فيصل بن جفين الدعجانی العتيبی۔مجاہد بن رشيد بن محمد الرشيد ۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں