.

ایف بی آئی کا نیا دھماکا: بل کلنٹن کے خلاف پرانی تحقیقاتی رپورٹ جاری کردی

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

امریکا کے وفاقی تحقیقاتی ادارے (ایف بی آئی) نے صدارتی انتخابات سے ایک ہفتہ قبل منگل کے روز ایک نیا دھماکا کر دیا اور سابق صدر بل کلنٹن کی جانب سے معافی کے ایک متنازعہ آرڈی ننس کے حوالے سے پرانی تحقیقاتی رپورٹ جاری کر دی ہے۔ یہ آرڈی ننس کلنٹن نے اپنی مدت صدارت کے آخری روز جاری کیا تھا۔

2005 ء میں تیار کردہ 129 صفحات پر مشتمل رپورٹ میں کلنٹن کی جانب سے مارک رِچ کے بارے میں جاری آرڈی ننس پر روشنی ڈالی گئی ہے۔ امریکا کا ارب پتی شہری مارک رچ 2013 میں فوت ہو گیا تھا۔ اس پر ٹیکس چوری ، مشتبہ تجارتی معاملات اور اثر و رسوخ کا ناجائز فائدہ اٹھانے کے مقدمات قائم تھے۔

ایف بی آئی نے اپنی ویب سائٹ پر اس رپورٹ کا پورا متن جاری نہیں کیا ہے اور خفیہ معلومات پر مشتمل اصل متن کے کئی حصوں کو حذف کر دیا ہے۔ یہ رپورٹ "ایف بی آئی" کے ڈائریکٹر جيمس كومی کے اس دھماکا خیز اعلان کے بعد سامنے آئی ہے جس میں انھوں نے کہا تھا کہ ہلیری کلنٹن کے خلاف ای میل اسکینڈل کی دوبارہ تحقیقات کی جائیں گی۔ ڈیموکریٹک صدارتی امیدوار نے وزیر خارجہ کی حیثیت سے سرکاری خط و کتابت کے لیے سرکاری ای میل اکاؤنٹ استمعال کرنے کے بجائے نجی سرور استعمال کیا تھا۔

ہلیری کلنٹن کی انتخابی مہم نے صدارتی انتخابات سے پہلے یہ پرانی رپورٹ جاری کرنے کے "ایف بی آئی" کے فیصلے کی مذمت کی ہے۔

ان کے سرکاری ترجمان برائن فیلن کا کہنا ہے کہ "کیا ایف بی آئی 1970ء کی دہائی میں رہائش گاہوں کی فروخت میں ڈونلڈ ٹرمپ کی جانب سے اپنائے گئے نسلی امتیاز کے حوالے سے بھی دستاویزات جاری کرے گا ؟ "

وفاقی پولیس کے اس اعلان کے بعد کہ مذکورہ پرانی تحقیقاتی رپورٹ کے بعد مزید تحقیقاتی رپورٹیں جاری کی جائیں گی، ڈیموکریٹک کیمپ کے اندر تناؤ میں اضافہ ہو گیا ہے۔

بل کلنٹن نے 20 جنوری 2001 کو اپنی مدت صدارت کے آخری روز متعدد افراد کے لیے خصوصی معافی کا اعلان کیا تھا جن میں ارب پتی مارک رچ بھی شامل تھا۔ مارک رچ تیل کی تجارت ، مشتبہ سودوں ، ٹیکس چوری اور اثر و روسوخ کا ناجائز فائدہ اٹھانے کے حوالے سے ایک علامت شمار کیا جاتا تھا۔

ٹیکس چوری کے سلسلے میں مارک رچ کے خلاف گرفتاری کے وفاقی وارنٹ جاری ہوچکے تھے مگر وہ امریکا سے سوئٹزرلینڈ فرار ہو گیا جس پر "ایف بی آئی" نے اس کی گرفتاری پر انعامی رقم بھی مقرر کردی تھی۔

مارک کی سابقہ اہلیہ ڈنیز نے صدارتی انتخابات میں ڈیموکریٹک کیمپ کو مالی سپورٹ فراہم کی ہے۔ اس نے مستقبل کی کلنٹن چیریٹی فاؤنڈیشن کے لیے مالی عطیات بھی دیے ہیں۔

"ایف بی آئی" کے موجودہ سربراہ جیمس کومی نے 80ء اور 90ء کی دہائیوں میں بحیثیت اٹارنی جنرل مارک رچ کے خلاف تعاقب کے معاملے کی نگرانی کی تھی۔ اس کے علاوہ وہ کلنٹن کی جانب سے جاری معافی کے متنازعہ آرڈی ننس کے خلاف تحقیقات کے بھی نگراں رہے تھے۔