.

یورپی یونین کی روس پر نئی پابندیاں

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

سرکاری ذریعے کے مطابق یورپی یونین نے اُن متعدد افراد پر پابندیاں عائد کرنے کا فیصلہ کیا ہے جن پر جزیرہ نما القرم میں اپنی سرگرمیوں کے ذریعے یوکرین کی سیادت پامال کرنے کا الزام ہے۔ واضح رہے کہ روس نے 2014 میں جزیرہ نما القرم کو ضم کر لیا تھا۔

سلوواکیہ کے وزیر مالیات جن کے ملک کے پاس اس وقت یورپی یونین کی 28 ممالک پر مشتمل کونسل کی سربراہی ہے.. انہوں کہا کہ " نئے ناموں کی فہرست تیار کرلی گئی ہے جن کو یوکرین کی خودمختاری ، سیادت اور اس کی اراضی کی یکجہتی کے خلاف کارروائیوں کی بنا پر پابندیوں کا سامنا ہوگا"۔

وہ برسلز میں 28 رکن ممالک کے وزراء مالیات کے اجلاس کے بعد ایک پریس کانفرس میں صحافیوں کے سوالات کا جواب دے رہے تھے۔

یورپی ذرائع کے مطابق مذکورہ نئی پابندیوں سے متعلق افراد کی شناخت کا اعلان بدھ کے روز یورپی یونین کے سرکاری اخبار میں کیا جائے گا جس کے بعد ان کا اطلاق ہوجائے گا۔

ایک ذریعے کا کہنا ہے کہ ان افراد میں القرم سے تعلق رکھنے والے چھ ارکان پارلیمنٹ شامل ہیں جو ستمبر میں ہونے والے قانون ساز انتخابات میں روسی فیڈریشن کے ایوان زیریں میں منتخب ہوئے تھے۔

یورپی یونین کے مطابق مارچ 2014 میں روس کا القرم کو ضم کرلینا غیر قانونی تھا لہذا وہ اس جزیرہ نما میں ہونے والے آخری قانون ساز انتخابات کے نتائج تسلیم کرنے کو بھی مسترد کرتی ہے۔