.

ڈونلڈ ٹرمپ کی وائٹ ہاؤس آمد،اوباما کی ٹیم مجسم غم!

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

امریکا میں حالیہ صدارتی انتخابات میں کامیاب ہونے والے ڈونلڈ ٹرمپ سبکدوش ہونے والے صدر باراک اوباما کی دعوت پر جمعرات کو وائٹ ہاؤس آئے جہاں ان کا سرکاری سطح پر استقبال کیا گیا۔

اگرچہ صدر باراک اوباما اور ڈونلڈ ٹرمپ کے درمیان ڈیڑھ گھنٹے تک جاری رہنے والی ملاقات کےدوران لی گئی تصاویر بھی دونوں رہ نماؤں کی الگ الگ کہانی بیان کرتی ہیں مگر اس موقع پر باراک اوباما کی وائیٹ ہاؤس میں قائم کردہ ٹیم کا ایک گروپ فوٹو سامنے آیا ہے۔ یہ ٹیم ان افراد پر مشتمل ہے جو وائیٹ ہاؤس میں باراک اوباما کی کچن کیبنٹ بھی قرار دی جاتی ہے۔ اس گروپ فوٹو میں اوباما کی قصرسفید میں سرگرم ٹیم کے اہم ذمہ داران کو دیکھا جا سکتا ہے۔

سوشل میڈیا پر یہ تصویر بڑے پیمانے پر شیئر کی جارہی ہے۔ تصویر میں دیکھے جانے والے اوباما کی ٹیم کے کارکنان میں سے بیشتر کے چہرے لٹکے ہوئے ہیں اور وہ مرجھائے دیکھے جا سکتے ہیں۔ بعض تو ٹرمپ کی آمد پر رو بھی پڑے اور کچھ افراد کے چہروں پر انتقام کےجذبات ابھرتے ظاہر ہوتے ہیں جب کہ کچھ ٹرمپ پر اپنا غصہ چھپانے کی ناکام کوشش کرتے ہیں۔ صاف لگتا ہے کہ انہوں نئے صدر کا خوش دلی سے استقبال نہیں کیا بلکہ وہ ٹرمپ کی وائیٹ ہاؤس آمد پر مجسم غم ہیں۔

سوشل میڈیا پر تیزی سے مقبول ہونے والے اس گروپ فوٹو پر ہر طرح کےتبصرے بھی جاری ہیں۔ بعض لوگوں کا کہنا ہے کہ تصویر فوٹو شاپ کا کمال ہے جب کہ کچھ اسے حقیقی منظر کے طور پر پیش کرتے ہیں۔

بعض لوگوں کا خیال ہے کہ اوباما کی ٹیم کےچہروں پر جو مردنی چھائی ہے وہ ٹرمپ کی وجہ سے نہیں بلکہ اوباما کی وجہ سے ہے۔ تاہم اکثریت کا یہی تاثر ہے کہ اوباما کی ٹیم کی یہ کیفیت ڈونلڈ ٹرمپ کے وائیٹ ہاؤس میں قدم رکھنے کا رد عمل ہے۔