.

جنگ بندی کی خلاف ورزی، یمنی فوج کو جوابی کارروائی کا حکم

سیزفائر کی خلاف ورزی کرنے والوں کے ساتھ کوئی رعایت نہ برتی جائے:صدر ہادی

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

یمن کے صدر عبد ربہ منصور ھادی نے سرکاری فوج کو حکم دیا ہے کہ وہ یمن کے ایران نواز حوثی باغیوں کی طرف سے سیز فائر کی خلاف ورزیوں کا بھرپور جواب دے۔

العربیہ ٹی وی کی رپورٹ کے مطابق صدر ھادی نے مغربی یمن میں تعینات فوج نے پانچویں ریجن کے سربراہ بریگیڈیئر جنرل توفیق القیز سے ٹیلیفون پر بات کرتے ہوئے کہا کہ یمنی باغیوں کی سیز فائر خلاف ورزیوں کا منہ توڑ جواب دیا جائے۔ ٹیلیفون پر بات کرتے ہوئے جنرل القیز نے صدر کو میدان جنگ کی تازہ ترین صورت حال بارے بریفنگ بھی دی۔اس موقع پر صدر نے سرکاری فوجی عہدیدار سے کہا کہ جنگ بندی کی خلاف ورزی کرنے والے باغیوں کے خلاف کارروائی میں کوئی نرمی نہ برتی جائے۔ صدر ھادی کا کہنا تھا کہ یمنی حوثی باغیوں کی جانب سے جنگ بندی کی خلاف ورزیوں کی مانیٹرنگ کے لیے فضائی نگرانی بھی کی جا رہی ہے۔

اتوار کے روز یمنی فوج کے ایک ذریعے نے دعویٰ کیا تھا کہ عرب اتحادی فوج نے حوثی باغیوں کی طرف سے مآرب کی طرف داغے گئے تین بیلسٹک میزائل حملے ناکام بنا دیے ہیں۔ ذرائع کا کہنا ہے کہ تینوں بیلسٹک میزائلوں کو ہدف تک پہنچنے سے قبل ہی فضاء میں تباہ کردیا گیا تھا۔

خیال رہے کہ یمنی باغیوں کی جانب سے یہ حملے ایک ایسے وقت میں کیے گئے ہیں دوسری جانب سعودی عرب کی قیادت میں یمن میں آئینی حکومت کی بحالی کے لیے جاری آپریشن کےدوران 48 گھنٹے کی جنگ بندی کا اعلان کیا تھا۔ مگر اس جنگ بندی کے دوران حوثیوں کی طرف سے البیضاء اور مآرب گورنریوں سمیت کئی دوسرے شہروں میں فائرنگ اور گولہ باری کا سلسلہ جاری رہا۔