.

پیرس میں اپوزیشن کانفرنس پر ایران تشویش کا شکار

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

فرانس کے درالحکومت پیرس میں ہفتہ 26 نومبر کو ایرانی قومی کونسل برائے مزاحمت (اپوزیشن) کی کانفرنس کا انعقاد ہو رہا ہے۔ بین الاقوامی طور پر کانفرنس کو غور سے دیکھا جا رہا ہے جب کہ کانفرنس میں سامنے آنے والے متعقع فیصلوں کے حوالے سے ایران گہری تشویش کا شکار ہے۔

اس حوالے سے ایرانی قومی کونسل برائے مزاحمت کی سربراہ مریم رجوی نے باور کرایا ہے کہ ایرانی عوام کو ولایت فقیہ کے خلاف جامع مزاحمت کا حق حاصل ہے۔ انہوں نے واضح کیا کہ مذکورہ کانفرنس بھی ایران میں مُلائیت کے نظام کے خلاف اجتماعی عدم اطمینان اور ناراضی کا نتیجہ ہے۔

مبصرین نے توقع ظاہر کی ہے کہ کانفرنس میں پیش کیے جانے والے موقف کے ضمن میں مغربی ممالک سے مطالبہ کیا جائے گا کہ وہ ایرانی نظام کے واسطے رعایت پیش کرنے کی پالیسی روک دیں اور اس کے بدلے ایرانی عوام کی اپنی آزادی کے لیے جاری جدوجہد کو سپورٹ کریں۔

کانفرنس میں مریم رجوی شام کے حوالے سے ایرانی قومی کونسل برائے مزاحمت کا موقف پیش کریں گی اور شامی عوام اور شامی جنگجوؤں کے ساتھ مکمل یک جہتی کا اعلان کریں گی۔

یاد رہے کہ گزشتہ ہفتے کے آغاز پر ایران میں اپوزیشن کے ہزاروں ارکان اور حامیوں نے لندن کے وسط میں ایک مظاہرے کے دوران ایران میں سزائے موت اور اعلانیہ پھانسیوں کی بڑھتی ہوئی کارروائیوں کی سخت مذمت کی۔