.

سعودی آرامکو کے 42 ارب 70 کروڑ ڈالرز کے منصوبوں کا افتتاح

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

سعودی عرب کے فرمانروا شاہ سلمان بن عبدالعزیز نے جمعرات کے روز الظہران میں سعودی آرامکو اور شاہ عبدالعزیز مرکز برائے عالمی ثقافت کے متعدد بڑے منصوبوں کا افتتاح کیا ہے۔

سعودی پریس ایجنسی ( ایس پی اے) کی رپورٹ کے مطابق تیل کے منصوبوں کی مالیت 42 ارب 66 کروڑ ڈالرز ہے اور ان کی تکمیل کے بعد سعودی آرامکو کی یومیہ پیداواری صلاحیت میں تیس لاکھ بیرل کا اضافہ ہوجائے گا۔

شاہ سلمان کی الظہران میں سعودی آرامکو کے تیل سپلائی مرکز میں آمد پر مشرقی صوبے کے گورنر شہزادہ سعود بن نایف بن عبدالعزیز ،وزارت توانائی کے مشیر شہزادہ فیصل بن ترکی بن عبدالعزیز ،توانائی ،صنعت اور معدنی وسائل کے وزیر خالد الفالح اور سعودی آرامکو کے صدر اور سی ای او امین بن حسن الناصر نے استقبال کیا۔

سعودی فرمانروا کو آمد کے بعد تیل سپلائی مرکز کی کارکردگی اور سعودی آرامکو کی تاریخ کے بارے میں تفصیلی ویژول پریزینٹیشن دی گئی۔اس موقع پر امین الناصر نے بتایا کہ اس مرکز کے ذریعے نئے منصوبے شروع کیے جارہے ہیں۔

انھوں نے بتایا کہ دنیا میں کسی اور ملک میں اس مرکز جیسی کارکردگی اور صلاحیت کا حامل کوئی اور مرکز نہیں ہے۔اس کے تحت ملک بھر میں پھیلے ہوئے ایک مربوط نیٹ ورک کے ذریعے ڈیڑھ کروڑ بیرل خام تیل کی پیداوار اور گیس کو کنٹرول کیا جاتا ہے۔اس بریفنگ کے بعد شاہ سلمان بن عبدالعزیز نے کمپنی کے چند بڑے منصوبوں کا افتتاح کیا۔

پھر سعودی شاہ الظہران ہی میں واقع شاہ عبدالعزیز مرکز برائے عالمی ثقافت گئے۔وہاں سعودی ولی عہد اور وزیر داخلہ شہزادہ محمد بن نایف نے ان کا خیرمقدم کیا۔ انھوں نے سعودی مملکت کے بانی شاہ عبدالعزیز کی تاریخی تصاویر ملاحظہ کیں۔

انھوں نے سعودی مملکت اور جزیرہ نما عرب کے تجارتی راستوں سے متعلق تاریخی آثار ونوادر اور فن پاروں کی نمائش کا افتتاح کیا۔اس نمائش کا اہتمام سعودی کمیشن برائے سیاحت اور قومی ورثہ نے کیا تھا۔

اس کمیشن کے صدر شہزادہ سلطان بن سلمان بن عبدالعزیز نے خادم الحرمین الشریفین کو نمائش کے بارے میں تفصیل سے آگاہ کیا۔یہ نمائش اس سے پہلے یورپ کے چار عجائب گھروں اور امریکا کے پانچ عجائب گھروں میں لگائی جا چکی ہے اور وہاں تیس لاکھ سے زیادہ لوگوں نے اس کو دیکھا تھا۔

شاہ سلمان نے نمائش میں رکھے گئے نمونے ملاحظ کیے اور اس کے بعد انھوں نے نمائش کو ایشیائی ممالک میں لے جانے کی منظوری دے دی۔اس سلسلے کی پہلی نمائش بیجنگ میں 20 دسمبر کو لگائی جائے گی۔ بعد ازاں کوریا اور جاپان میں بھی اس نمائش کا اہتمام کیا جائے گا۔