.

اوباما ایران پر پابندیوں میں توسیع پر دستخط کر دیں گے : واشنگٹن

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

واشنگٹن میں وہائٹ ہاؤس نے جمعے کے روز اس توقع کا اظہار کیا ہے کہ امریکی صدر باراک اوباما ایران پر مزید دس برس کے لیے پابندیوں کی توسیع سے متعلق قانون سازی کو منظور کر لیں گے جس کے بعد یہ باقاعدہ ایک قانون بن جائے گا۔

صحافیوں کو یومیہ بریفنگ کے دوران وہائٹ ہاؤس ترجمان ایرک شولٹز کا کہنا تھا کہ " ہم سمجھتے ہیں کہ ایران پر پابندیوں کی توسیع کا قانون ضروری نہیں ہے تاہم ہمارا یہ بھی خیال ہے کہ یہ ایرانی (نیوکلیئر) معاہدے پر ہر گز اثر انداز نہیں ہوگا... میں توقع کرتا ہوں کہ صدر اس قانون سازی پر دستخط کر دیں گے"۔

ادھر ایرانی وزارت خارجہ نے جمعے کے روز ایک بیان میں کہا کہ امریکی سینیٹ کی جانب سے ایران پر مزید دس برس کے لیے پابندیوں کی توسیع کی تائید ، تہران اور عالمی طاقتوں کے درماین 2015 میں طے پانے والے تاریخی نیوکلیئر معاہدے کی خلاف ورزی ہے۔ وزارت خارجہ کے ترجمان بہرام قاسمی کے مطابق نیوکلیئر معاہدے پر عمل درامد کی نگرانی کی ذمے دار ایرانی کمیٹی کو اس امر سے آگاہ کیا جائے گا۔

امریکی سینیٹ نے جمعرات کے روز ایران پر عائد موجودہ پابندیوں میں مزید دس برس کے لیے توسیع کرنے کی منظوری دے دی تھی۔ منظوری کے بعد اس قانون کے منصوبے کو صدر باراک اوباما کے دستخط کے لیے وہائٹ ہاؤس ارسال کر دیا گیا تاکہ یہ باقاعدہ قانون بن جائے۔

اس سے قبل امریکی ایوان نمائندگان نے نومبر میں تقریبا متقفہ طور پر مذکورہ قانون سازی کو منظور کر لیا تھا۔ کانگریس میں مشیروں کا کہنا تھا کہ انہیں توقع ہے کہ اوباما اس قانون کے مسودے کے اپنے دفتر پہنچتے ہی اس پر دستخط کر دیں گے۔