.

جرمن وزیردفاع سعودی عرب سے فوجی تربیت کے سمجھوتے کی تکمیل کی خواہاں

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

جرمن وزیر دفاع ارسولا وان دیر لین جمعرات کو سعودی عرب کے دو روزہ دورے پر دارالحکومت الریاض پہنچی ہیں۔ جرمن سفارت خانے کی جانب سے جاری کردہ ایک بیان کے مطابق ان کے دورے کا مقصد سعودی عرب کے فوجی افسروں کی جرمنی میں تربیت سے متعلق مجوزہ سمجھوتے کو حتمی شکل دینا ہے۔

وہ سعودی وزیر دفاع اور نائب ولی عہد شہزادہ محمد بن سلمان کے ساتھ دونوں ملکوں کے درمیان دو طرقہ تعلقات کو بڑھانے سے متعلق امور پر بات چیت کرنے والی تھیں۔

سفارت خانے کے بیان کے مطابق وزیر دفاع تربیت کے شعبے میں تعاون بڑھانے سے متعلق بات چیت کو حتمی شکل دیں گی۔اس تربیتی عمل کا آیندہ سال سے آغاز ہوگا اور اس کے تحت جرمن ڈیفنس کالج میں سعودی مسلح افواج کے نوجوان افسروں اور عملے کو تربیت دی جائے گی۔

الریاض میں متعیّن جرمن سفیر ڈائیٹر ہالر کا بیان میں کہنا ہے کہ وان دیر لین اس سال سعودی عرب کا دورہ کرنے والی جرمنی کی دوسری بڑی عہدے دار ہیں۔اس سے دونوں ملکوں کے درمیان مضبوط تعلقات کی عکاسی ہوتی ہے۔

جرمن وزیر دفاع ملک کی چانسلراینگلا مرکل کی جماعت مسیحی جمہوری یونین سے تعلق رکھتی ہے۔اس جماعت نے سوشل ڈیمو کریٹس کے ساتھ مل کر مخلوط حکومت بنا رکھی ہے۔