.

ایرانی سپریم لیڈر کے دفتر کے قریب ڈرون مار گرایا گیا

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

اسلامی جمہوریہ ایران کے رہبر انقلاب [سپریم لیڈر] آیت اللہ علی خامنہ ای کے دفتر کے قریب فضا میں موجود ایک بغیر پائلٹ طیارے کو مار گرایا گیا ہے۔

العربیہ ڈاٹ نیٹ کے مطابق ایرانی فضائیہ کی طرف سےجاری کردہ ایک بیان میں کہا گیا ہے کہ مرشد اعلیٰ کے دفتر کےقریب فضا میں بغیر اجازت پرواز کرنے والے ایک مشتبہ ڈرون کو میزائل سے نشانہ بنایا گیا ہے۔

بیان میں کہا گیا ہے کہ یہ ڈرون ایک دستاویزی فلم کی فوٹیج کے لیے فضا میں چھوڑا گیا تھا مگر وہ اچانک ممنوعہ فضائی حدود میں داخل ہو گیا۔

خیال رہے کہ تہران کے وسط میں سپریم لیڈر کا دفتر شاہراہ باستور پر واقع ہے۔ سپریم لیڈر کے دفتر کو نہ صرف زمین پر فول پروف سیکیورٹی مہیا کی گئی ہے بلکہ فضائی حدود میں بھی کسی طیارے کو جانے کی اجازت نہیں دی جاتی۔

خبر رساں ادارے ’تسنیم‘ کے مطابق تہران کے گورنرکے سیکیورٹی مشیر محسن ہمدانی کا کہنا ہے کہ مار گرایا گیا ڈرون کوئی باضابطہ جنگی نوعیت کا نہیں تھا بلکہ سرکاری ٹیلی ویژن چینل کا ایک چھوٹا جہاز تھا جسے تصاویر اور فوٹیج تیار کرنے کے لیے استعمال کیا جاتا ہے۔