.

طالبان کا قندھار میں اماراتی سفیر پر بم حملے سے اظہار لاتعلقی

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

افغان طالبان نے جنوبی شہر قندھار میں ایک روز قبل ہونے والے بم دھماکے میں ملوّث ہونے کی تردید کردی ہے اور کہا ہے کہ انھوں نے یہ بم نصب نہیں کیا تھا۔

افغانستان میں متحدہ عرب امارات کے سفیر جمعہ محمد عبداللہ الکعبی اور جنوبی صوبے قندھار کے گورنر ہمایوں عزیزی اس بم حملے میں زخمی ہوگئے تھے۔

بم حملے میں گورنر قندھار کے مہمان خانے کو نشانہ بنایا گیا تھا۔اس وقت وہاں اماراتی سفارت کاروں کے اعزاز میں ظہرانہ دیا جا رہا تھا۔

طالبان نے بدھ کو جاری کردہ ایک مختصر بیان میں ''مقامی داخلی مخاصمت '' کو قندھار کے گورنر کے مہمان خانے پر بم حملے کا ذمے دار قرار دیا ہے۔اس واقعے میں پانچ افراد ہلاک اور بارہ زخمی ہوگئے تھے۔

طالبان نے گذشتہ روز دارالحکومت کابل میں پارلیمان کے نزدیک دو بم دھماکوں کی ذمے داری قبول کی تھی۔ ان کے نتیجے میں اڑتیس افراد ہلاک اور کم سے کم اسّی زخمی ہوگئے تھے۔

واضح رہے کہ طالبان ماضی میں بھی سفارت کاروں یا سکیورٹی فورسز پر حملوں میں ملوّث ہونے کی تردید کرچکے ہیں لیکن بعد میں افغان سکیورٹی فورسز نے ان ہی کو ان حملوں کا ذمے دار قرار دیا تھا۔اماراتی حکام نے فوری طور پر طالبان کے اس بیان پر کوئی تبصرہ نہیں کیا ہے۔