اٹلی میں چینی ریستوران میں انسانی گوشت کی فروخت

ہوٹل میں انسانی پاؤں کی موجودگی کا لرزہ خیز انکشاف

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size

سماجی رابطوں کی ویب سائیٹس پر شمالی اٹلی میں قائم ایک چینی ہوٹل میں گاہکوں کو انسانی گوشت فراہم کیے جانے کی لرزہ خیز خبر نے لوگوں کو ایک نئے صدمے سے دوچار کیا ہے۔

العربیہ ڈاٹ نیٹ کے مطابق شمالی اٹلی میں قائم ایک چینی ہوٹل میں رات کے کھانے میں انسانی ٹانگ کا گوشت گاہکوں کو فراہم کیا جاتا رہا ہے۔

ایک نامعلوم ویٹرنے کٹی ہوئی انسانی ٹانگ کی دو تصاویر پوسٹ کی ہیں اور ساتھ ہی اس بات کی تصدیق کی ہے کہ ہوٹل میں سلوینین گاہکوں اور ان کے دوستوں کو انسانی گوشت کھلایا جاتا رہا ہے۔

اخبار’ڈیلی میل’ کے مطابق مذکورہ ویٹر کا کہنا ہے کہ ہوٹل میں آنے والے ایک شخص نے ’ریچھ کی ٹانگ‘ کے نام سے مشہور چینی ڈیش طلب کی تھی۔ ہوٹل میں آنے والے ایک مہمان نے اطالوی پولیس کو انسانی گوشت کی لرزہ خیز تصاویرسے آگاہ کیا ہے جس کے بعد پولیس اور فوڈ انسپکشن محکمے کے اہلکاروں نے شمالی اٹلی کے شہر بادوا میں قائم اس ہوٹل پر چھاپہ مارا۔ ہوٹل سے بھاری مقدار میں مچھلی اور نامعلوم جانوروں کا گوشت قبضے میں لیا گیا ہے۔ تفتیش کے دوران پتا چلا ہے کہ ہوٹل میں رکھے گئے تمام ریفریجیریٹروں اور فرائی کے لیے استعمال ہونے والے اونز میں چربی اور گندگی کے ڈھیر پائے گئے ہیں۔ مذکورہ ہوٹل سے کیکڑے کا زاید المیعاد گوشت اور مینڈک کی ٹانگیں بھی ملی ہیں۔ حکام نے انسانی ٹانگ کی تصاویر اور انسانی گوشت کی ہوٹل میں موجودگی کی تحقیقات شروع کردی ہیں۔

مقبول خبریں اہم خبریں