.

استنبول میں نائٹ کلب پر حملے میں غیرملکی سراغرساں تنظیم ملوث ؟

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

ترکی کے نائب وزیراعظم نعمان قرطولمس نے کہا ہے کہ استنبول میں نئے سال کی پہلی رات ایک نائٹ کلب پر حملے میں ایک سراغرساں تنظیم بھی ملوث تھی کیونکہ یہ حملہ بڑے پیشہ ورانہ انداز میں کیا گیا تھا۔

نائب وزیراعظم نے ترک نشریاتی ادارے الحبر سے انٹرویو میں کہا ہے کہ ''بظاہر یہ لگتا ہے کہ رینا حملہ کسی دہشت گرد تنظیم کی کارروائی نہیں تھا بلکہ اس واقعے میں کوئی سراغرساں تنظیم بھی ملوث ہے۔یہ مکمل طور پر منصوبہ بند اور منظم فعل تھا''

استنبول میں نئے سال کی پہلی رات ایک نائٹ کلب پر یک مسلح شخص نے اندھا دھند فائرنگ کردی تھی جس کے نتیجے میں 39 افراد ہلاک اور کم سے کم 70 زخمی ہوگئے تھے۔داعش نے اس خودکش بم حملے کی ذمے داری قبول کی تھی۔ترک حکام نے اس حملے سے تعلق کے الزام میں یغور نسل کے دو چینی باشندوں سمیت متعدد افراد کو گرفتار کر لیا ہے۔