.

یوکرین میں ایران جانے والا میزائل بردار طیارہ ضبط

طیارے پر کسی اندراج کے بغیر روسی ساختہ ٹینک شکن میزائل لدے ہوئے تھے

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

یوکرین نے ایران جانے والا ایک میزائل بردار طیارہ ضبط کرنے کا اعلان کیا ہے۔

یوکرینی حکام نے اس طیارے کو دارالحکومت کیف کے ژولیانے ائیرپورٹ پر روک لیا ہے۔اس پر روسی ساختہ ٹینک شکن گائیڈڈ میزائل لدے ہوئے تھے۔

روس کی خبررساں ایجنسی انٹرفیکس نے اس واقعے کی تصدیق کرتے ہوئے کہا ہے کہ یوکرین کی سرحدی پولیس نے کیف کے ہوائی اڈے پر ہتھیار برآمد کیے ہیں۔تلاشی کے دوران سترہ ایسے کنٹینر برآمد ہوئے ہیں جن کا پرواز کی کارگو تفصیل میں اندراج نہیں تھا۔

ایک یوکرینی ترجمان نے بتایا ہے کہ تین کنٹینروں میں ہلکے وزن کے میزائل چھپائے گئے تھے۔ یہ انفرا ریڈ گائیڈڈ ٹینک شکن میزائل ہیں جبکہ باقی چودہ بکسوں سے طیارے کے فاضل پرزہ جات برآمد ہوئے ہیں۔

طیارے کے عملہ نے ابتدائی تفتیش کے دوران ہتھیاروں کی موجودگی کے بارے میں لاعلمی ظاہر کی ہے۔عملہ کے ارکان میں ایرانی یا یوکرینی شامل ہیں۔بعد میں یوکرینی حکام نے بین الاقوامی قانون کی خلاف ورزی کے الزام میں ان ہتھیاروں کو ضبط کر لیا ہے۔

واضح رہے کہ ایران اور چھے بڑی طاقتوں کے درمیان جولائی 2015ء میں طے شدہ جوہری معاہدے کے تحت تہران پر اقوام متحدہ کی عاید کردہ بیشتر پابندیاں گذشتہ سال جنوری میں ختم کردی گئی تھیں لیکن ایران پر ابھی تک اسلحے کی خرید کی پابندی اور دیگر قدغنیں عاید ہیں۔یہ پابندیاں جوہری معاہدے کا حصہ نہیں ہیں۔