.

ٹرمپ کے حکم پر امریکا 12 رکنی بحر الکاہل معاہدے سے نکل گیا

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے ایک نئے صدارتی فرمان پر دستخط کیے جس کے مطابق امریکا بحر الکاہل کے آزاد تجارتی معاہدے میں شامل بارہ رکنی گروپ باہر ہوگیا ہے۔

العربیہ ڈاٹ نیٹ کے مطابق نو منتخب صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے اپنی انتخابی مہم کے دوران وعدہ کیا تھا کہ صدر بن کروہ امریکا کو ’ٹرانس پیسفیک پارٹنر شپ ڈیل‘[ TTP] نامی تجارتی معاہدے سے نکال دیں گے۔

گذشتہ روز ڈونلڈ ٹرمپ نے فیڈرل باڈیز میں ملازمتوں پر پابندی عاید کرنے کے ساتھ غیر سرکاری تنظیموں پر وفاقی فنڈز حاصل کرنے پر بھی پابندی عاید کردی۔

اس سے پہلے صدر ٹرمپ نے ملک میں ملازمتوں کے مواقع برقرار رکھنے والی کمپنیوں کو ٹیکس اور قوانین میں 'بڑی' رعایات دینے کا وعدہ کیا ہے۔

صدر ٹرمپ نے متنبہ بھی کیا کہ وہ ایسی کمپنیوں پر 'بہت بھارئی سرحدی ٹیکس' بھی عائد کر دیں گے جو اپنا پیداواری عمل امریکا سے باہر منتقل کریں گی۔

انہوں نے ‘پیسفیک‘ آزادانہ تجارت کے معاہدے سے اخراج پر تبصرہ کرتے ہوئے کہا کہ ’جو ابھی ہم نے کیا وہ امریکی ورکروں کے لیے بڑی چیز ہے۔

خیال رہے کہ ’TTP‘ معاہدے میں ایشیا اور پیسفیک ممالک کے درمیان آزادانہ تجارت کو فروغ دینا شامل ہے۔ برونائی، چلی، نیوزی لینڈ، سینگا پور، آسٹریلیا، ملائیشیا، پیرو اور امریکا اس کا حصہ ہیں۔ مگر اب امریکا اس معاہدے سے باہر ہوگیا ہے۔