.

کویت میں شاہی خاندان کے فرد سمیت 7 مجرموں کو پھانسی

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

کویت میں شاہی خاندان کے ایک فرد سمیت سات قیدیوں کو بدھ کے روز پھانسی دے دی گئی ہے۔

جن مجرموں کو تختہ دار پر لٹکایا گیا ہے،ان میں دو کویتی ،دو مصری ،ایک بنگلہ دیشی ،ایک فلپائنی اور ایک ایتھوپیائی شہری ہے۔انھیں عدالت نے قتل ، اقدام قتل ،اغوا اور عصمت ریزی کے مقدمات میں قصور وار قرار دے کر سزائے موت کا حکم دیا تھا۔

کویتی حکومت نے پھانسی پانے والے شاہی خاندان کے فرد کی شناخت شیخ فیصل عبداللہ الجابر الصباح کے نام سے کی ہے۔اس کو عدالت نے قتل عمد اور آتشیں ہتھیار رکھنے کے جرم میں قصور وار قرار دے کر 2011ء میں سزائے موت سنائی تھی۔ شہزادے شیخ فیصل نے اپنے بھتیجے شیخ باسل سالم صباح السالم المبارک الصباح کو قتل کردیا تھا۔

تختہ دار پر لٹکنے والی دوسری کویتی نصرۃ العنزی نامی ایک عورت ہے۔اس نے 2009ء میں اپنے خاوند کی شادی کی تقریب کے لیے لگائے گئے شامیانے کو آگ لگا دی تھی جس کے نتیجے میں خواتین اور بچوں سمیت 59 افراد زندہ جل مرے تھے۔

فلپائنی اور مصری عورتیں گھریلو ملازمہ کے طور پر کام کرتی تھیں اور انھوں نے اپنے آجر خاندانوں کے افراد کو قتل کردیا تھا۔

دو مصریوں کو قتل عمد کے جرم اور بنگلہ دیشی کو اغوا اور عصمت ریزی کے جرم میں قصور وار قرار دے کر سزائے موت سنائی گئی تھی۔

فلپائنی حکام نے کویت میں پھانسی پانے والی عورت کی شناخت جکاٹیا پوا کے نام سے کی ہے۔ اس نے سنہ 2007ء میں اپنی کویتی مالکن کی بائیس بیٹی کو قتل کردیا تھا۔

یاد رہے کہ کویت میں اس سے پہلے 2013ء میں مختلف جرائم میں ماخوذ ایک پاکستانی ،ایک سعودی اور ایک بدو کو پھانسی دی گئی تھی۔