امریکا کے ہوائی اڈوں پر متعدد ایرانی اور غیرملکی مہاجرین گرفتار

ایران نے صدر ٹرمپ کے حکم کے ردعمل میں امریکیوں کے داخلے پر پابندی لگا دی

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
3 منٹس read

امریکا میں حکام نے صدر ڈونلڈ ٹرمپ کی جانب سے ایران سمیت سات مسلم ملکوں کے شہریوں کے لیے اپنی سرحدیں بند کرنے کے حکم پر دستخط کے بعد متعدد غیرملکیوں کو گرفتار کر لیا ہے یا انھیں امریکی حدود میں داخل ہونے سے روک دیا ہے جبکہ ایران نے بھی جوابی وار کرتے ہوئے امریکی شہریوں کے تاحکم ثانی ملک میں داخلے پر پابندی عاید کردی ہے۔

صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے جب جمعے کو انتظامی حکم پر دستخط کیے تو بہت سے مسافر طیاروں میں سوار ہوچکے تھے اور وہ امریکا کی جانب محو سفر تھے لیکن انھیں ہوائی اڈوں پر اترنے کے بعد وہیں روک لیا گیا ہے اور ملک میں داخل نہیں ہونے دیا جارہا ہے۔

نیویارک ٹائمز کی اطلاع کے مطابق جان ایف کینیڈی بین الاقوامی ہوائی اڈے پر گرفتار دو عراقیوں کے وکلاء نے ہفتے کے روز نیو یارک کے مشرقی ضلع کی عدالت میں ایک درخواست دائرکی ہے جس میں ان کی رہائی کا مطالبہ کیا گیا ہے۔

ایران کی خبررساں ایجنسیوں کی اطلاع کے مطابق متعدد ایرانی بالکل درست اور قانونی ویزوں پر امریکا کے سفر پر روانہ ہوئے تھے اور انھیں یہ توقع تھی کہ اس نئے حکم پر عمل درآمد میں ابھی کچھ وقت لگے گا لیکن انھیں امریکا کے ہوائی اڈوں پر اترنے کے بعد دھر لیا گیا ہے۔

بعض اطلاعات کے مطابق امریکا کی مختلف داخلی بندرگاہوں پر خاندانوں سمیت آنے والے ایرانیوں کی بڑی تعداد کو وہاں سے واپس بھیجا جارہا ہے اور انھیں ملک میں داخل ہونے کی اجازت نہیں دی جارہی ہے۔

دوسری جانب ایران نے صدر ڈونلڈ ٹرمپ کے ''توہین آمیز'' حکم کے ردعمل میں امریکیوں کے ملک میں داخلے پر پابندی عاید کرنے کا اعلان کیا ہے۔

ایرانی وزارت خارجہ نے ہفتے کے روز ایک بیان میں کہا ہے کہ ''اسلامی جمہوریہ ایران نے امریکا کے ایرانی شہریوں سے متعلق توہین آمیز فیصلے کا جواب دینے کا فیصلہ کیا ہے اور امریکا کے توہین آمیز اقدام کے قابل نفاذ رہنے تک امریکیوں کے ملک میں داخلے کو روکنے کا فیصلہ کیا ہے''۔

امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے گذشتہ روز ایک انتظامی حکم کے ذریعے چارماہ تک تمام مہاجرین کے ملک میں داخلے پر پابندی عاید کردی ہے اور ایران کے علاوہ شام،عراق ،لیبیا ،صومالیہ ،سوڈان اور یمن سے تعلق رکھنے والے شہریوں پر جائز ویزے ہونے کے باوجود 90 روز کے لیے امریکا میں داخلے پر پابندی عاید کردی ہے۔ اس حکم پر فوری طور پر عمل درآمد کا آغاز کردیا گیا ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں