قوموں کے درمیان دیواریں تعمیر کرنے کا دور لد چکا: حسن روحانی

تجارتی معاہدوں کی تنسیخ سے امریکی معیشت کی بڑھوتری میں کوئی مدد نہیں ملے گی

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

ایرانی صدر حسن روحانی نے کہا ہے کہ اب ملکوں کے درمیان دیواریں تعمیر کرنے کا وقت نہیں رہا ہے۔انھوں نے عالمی تجارت سے متعلق سمجھوتوں کی تنسیخ کے لیے اقدامات کو تنقید کا نشانہ بنایا ہے لیکن انھوں نے امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ کا نام نہیں لیا ہے۔

صدر ٹرمپ نے گذشتہ بدھ کے روز امریکا اور میکسیکو کے درمیان سرحد پر دیوار تعمیر کرنے کا حکم دیا تھا۔انھوں نے اپنی انتخابی مہم کے دوران میں غیرقانونی تارکین وطن کے امریکا میں داخلے کو روکنے کے لیے اس دیوار کی تعمیر کا وعدہ کیا تھا۔

حسن روحانی نے ہفتے کے روز ایران کے سرکاری ٹیلی ویژن سے نشر کی گئی تقریر میں کہا ہے کہ ''آج قوموں کے درمیان دیواریں کھڑی کرنے کا وقت نہیں رہا ہے۔ وہ شاید یہ بھول گئے ہیں کہ دیوارِ برلن کئی سال قبل گرا دی گئی تھی''۔

انھوں نے دارالحکومت تہران میں سیاحتی کانفرنس سے خطاب میں کہا کہ ''عالمی تجارتی معاہدوں کو منسوخ کرنے سے انھیں ان کی معیشت کو مضبوط بنانے میں کوئی مدد نہیں ملے گی۔اس سے عالمی معیشت کی بڑھوتری اور ترقی میں بھی کوئی مدد نہیں ملے گی۔دنیا کے لیے یہ وقت تجارت کے ذریعے قریب آنے کا ہے''۔

ایرانی صدر کا کہنا تھا کہ ''آج پُرامن بقائے باہمی کے اصول پر عمل پیرا ہو کر رہنے کا وقت ہے نہ کہ اقوام کے درمیان فاصلے پیدا کیے جائیں''۔ تاہم انھوں نے اپنی تقریر میں ایران سمیت سات ممالک کے شہریوں کے امریکا میں داخلے پر پابندی کے حکم کا کوئی حوالہ نہیں دیا ہے۔

ڈونلڈ ٹرمپ نے گذشتہ سوموار کو بین البر اعظمی تجارتی معاہدے سے امریکا کے باضابطہ طور پر دستبردار کا اعلان کیا تھا۔ انھوں نے انتخابی مہم کے دوران 2015ء میں طے شدہ اس معاہدے سے بھی امریکا کے اخراج کا وعدہ کیا تھا۔

ان کے پیش رو صدر براک اوباما نے اس معاہدے کو امریکا کی خارجہ پالیسی کا ایک اہم سنگ میل قرار دیا تھا لیکن ڈونلڈ ٹرمپ نے اس کومنسوخ کرنے کی دھمکی دی تھی۔تاہم اس معاہدے میں شامل باقی پانچ طاقتوں نے اس کو برقرار رکھنے کی توثیق کی ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں