یمن: المخا شہر اور بندرگاہ پر عرب فوج کے تازہ دم دستوں کی آمد

شہر اور بندرگاہ پر باغیوں کے خلاف فیصلہ کن کارروائی

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

یمن میں باغیوں کے خلاف جاری لڑائی کو آگے بڑھانے کے لیے ساحلی شہر المخاء اور اس کی بندرگاہ پر عرب اتحادی فوج کے تازہ دم دستے اتارے گئے ہیں۔ عرب اتحادی فوجیوں کی آمد کا مقصد المخاء اور اس کے اطراف میں باغیوں کی باقیات کو شکست دیتے ہوئے شہر کا کنٹرول مکمل طور پر یمنی فوج کے حوالے کرنے میں مدد کرنا ہے۔

ادھر دوسری جانب جمعہ کے روز المخا شہر میں یمنی فوج اور باغیوں کے درمیان متعدد مقامات پر جھڑپیں جاری ہیں۔ باغیوں نے المخاء شہر کو واپس لینے کی کوشش کی مگر یمنی فوج اور اس کی حامی مزاحمتی ملیشیا نے باغیوں کی سازش ناکام بنادی۔

’العربیہ‘ کے نامہ نگار کے مطابق سعودی عرب کے توپخانے اور عرب اتحادی فوج کی معاونت سے سرحدی علاقے الطوال کے بالمقابل حرض ڈاریکٹوریٹ اور ساحلی شہر میدی پر مکمل قبضہ کرلیا ہے اور ان علاقوں سے باغیوں کا مکمل صفایا ہوگیا ہے۔

خیال رہے کہ میدی شہر باغیوں کے لیے دفاعی اعتبار سے نہایت اہمیت کا حامل سمجھا جاتا رہا ہے جہاں سے حوثی باغیوں اور علی صالح ملیشیا تک ایرانی اسلحہ پہنچانے کی کوششیں کی جاتی تھیں۔

اس کے علاوہ اس شہر کو سعودی عرب پر راکٹ حملوں کے لیے بھی استعمال کیا جاتا رہا ہے۔ حرض اور میدی پر سرکاری فوج کے قبضے کے بعد سرحد پار سے سعودی عرب پر حملوں میں کمی آنے کے ساتھ ساتھ باغیوں کا اسلحہ سپلائی روٹ بھی ان سے چھن گیا ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں