بیلسٹک میزائل تجربات، ایرانی اداروں پر امریکی پابندیوں کا امکان

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
1 منٹ read

عالمی ذرائع ابلاغ نے امریکی حکومت کے ذمہ دار ذرائع کے حوالے سے بتایا ہے کہ ایران کے متنازع بیلسٹک میزائلوں کے تجربات پر واشنگٹن تہران پر نئی اقتصادی پابندیاں عاید کرنے پرغور کررہا ہے۔

امریکی حکومت کے ایک مصدقہ ذریعے نے شناخت ظاہر نہ کرنے کی شرط پر بتایا کہ آج، جمعہ کے روز ایران کے متعدد اداروں پر نئی پابندیاں عاید کی جاسکتی ہیں۔ ذرائع کا کہنا ہے کہ نئی امریکی حکومت ایران کے بیلسٹک میزائلوں کے تجربات کو تشویش کی نگاہ سے دیکھتی ہے تاہم ایران نے کہا ہے کہ بیلسٹک میزائلوں کے تجربات سنہ 2015ء میں طے پائے جوہری معاہدے کی خلاف ورزی نہیں ہیں۔

امریکی انتظامیہ کے ذریعے کا کہنا ہے کہ حکومت نے ایران کے 8 مختلف اداروں کی ایک فہرست تیار کی ہے۔ پابندیوں کی زد میں آنے والے ایرانی ادارے دہشت گردی کی سرگرمیوں سے منسلک ہونے کے ساتھ ساتھ ایران میں بیلسٹک میزائلوں کے تجربات سے مربوط ہیں۔
تاہم امریکی حکومت کے ذریعے نے ان آٹھ اداروں کے نام ظاہر نہیں کیے۔

خیال رہے کہ امریکی حکومت کی جانب سے ایران کے مختلف اداروں پر پابندیوں کی تیاری کا یہ نیا پروگرام ایک ایسے وقت میں سامنے آیا ہے جب گذشتہ اتوار کو ایران نے بیلسٹک میزائل تجربہ کیا تھا جس پر امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ کی جانب سے سخت برہمی کا اظہار کیا گیا۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں