امریکی پابندیاں: اینٹ کا جواب پتھر سے دینے کا ایرانی اعلان

ایران بھی امریکی شخصیات اور اداروں کوبلیک لسٹ کرنے کے لیے تیار

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

ایرانی وزارت خارجہ نے کل جمعہ کو امریکی وزارت خزانہ کی جانب سے بیلسٹک میزائلوں کے تجربات اور دہشت گردی کی پشت پناہی جاری رکھنے کے الزام میں ایرانی اداروں اور شخصیات پر پابندیوں کی شدید مذمت کی ہے اور کہا ہے کہ تہران بھی امریکا کی اینٹ کا جواب پتھر سے دے گا۔ تہران نے خبردار کیا ہے کہ وہ کسی بھی وقت امریکی شخصیات اور اداروں کو بلیک لسٹ کرسکتا ہے۔

ایران کے سرکاری ٹی وی کی پر نشر کیے گئے وزارت خارجہ کے بیان میں کہا گیا ہے کہ امریکی انتظامیہ کی طرف سے ایرانی شخصیات اور اداروں کو بلیک لسٹ کیے جانے پر تہران امریکیوں کو ویسا ہی جواب دے گا۔ امریکا کو مناسب جواب دینے کے لیے کوئی بھی قدم اٹھایا جاسکتا ہے۔

بیان میں کہا گیا ہے کہ امریکی حکومت نے ایرانی شخصیات اور اداروں پر پابندیوں کا اعلان کر کے یہ ثابت کیا ہے کہ امریکی انتظامیہ جان بوجھ کر حالات خراب کرنا چاہتی ہے۔

بیان میں کہا گیا ہے کہ تہران جوابی کارروائی کے طور پر امریکی کمپنیوں اور اداروں پر پابندیاں عاید کرسکتا ہے۔ ایرانی حکام کا کہنا ہے کہ ان کے پاس بھی دہشت گردی کی ملوث امریکی اداروں اور شخصیات کی ایک فہرست موجود ہے جن پر تہران کی جانب سے پابندیاں عاید کی جاسکتی ہیں۔

ایران نے امریکی پابندیوں کو غیر قانونی اور سلامتی کونسل کی قرارداد 2231 کی خلاف ورزی قرار دیا جس میں ایران اور چھ عالمی طاقتوں کے درمیان طے پائے تہران کے متنازع جوہری پروگرام کے معاہدے کی توثیق کی گئی ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں