.

ایردوآن اور ٹرمپ شام میں تعاون پر متفق

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

ترکی میں ایوان صدارت کے ذرائع نے بدھ کے روز بتایا ہے کہ صدر رجب طیب ایردوآن نے شام میں داعش تنظیم کے زیر قبضہ دو شہروں الرقہ اور الباب میں تعاون کے حوالے سے اپنے امریکی ہم منصب ڈونلڈ ٹرمپ کے ساتھ اتفاق رائے کیا ہے۔ یہ پیش رفت منگل کی رات دونوں سربراہان کے درمیان ٹیلیفونک گفتگو کے دوران سامنے آئی۔

ذرائع نے واضح کیا کہ دونوں شخصیات کے درمیان متعدد امور زیر بحث آئے جن میں شام میں سیف زون کا قیام، پناہ گزینوں کا بحران اور انسداد دہشت گردی شامل ہیں۔ اس موقع پر ایردوآن نے امریکا سے مطالبہ کیا کہ وہ شام میں کردوں کی تنظیم پیپلز پروٹیکشن کے یونٹوں کی سپورٹ اور معاونت روک دے۔

ذرائع نے بتایا کہ امریکی انٹیلی جنس ایجنسی (CIA) کے سربراہ مائیک بومبیو جمعرات کے روز ترکی کا دورہ کریں گے۔ ان کے دورے میں پیپلز پروٹیکشن یونٹس تنظیم کے معاملہ اور فتح اللہ گولن کے نیٹ ورک سے نمٹنے کا طریقہ کار زیر بحث آئے گا۔ انقرہ حکومت امریکا میں مقیم فتح اللہ گولن کو گزشتہ برس جولائی میں ترکی میں ناکام بنا دیے جانے والے عسکری انقلاب کی منصوبہ بندی کا ذمے دار ٹھہراتا ہے۔