یمنی فوج کا المخا کے وسطی علاقوں پر کنٹرول، باغی فرار

الصعدہ میں حکومتی فورسز کی کارروائی میں 26 باغی ہلاک

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

یمن میں آئینی حکومت کی بحالی کے لیے سرگرم عرب اتحاد کی طرف سے جاری کردہ ایک بیان میں کہا گیا ہے کہ یمنی فوج اور اس کی حامی ملیشیا نے ساحلی شہر المخا کے مرکز اور اہم علاقوں سے باغیوں کو نکال باہر کیا ہے۔

العربیہ کی رپورٹ کے مطابق اتحادی فوج کی طرف سے کہا گیا ہے کہ یمنی فوج اور حکومت نواز مزاحمتی فورسز نے مشترکہ کارروائی کے دوران المخا شہر کے وسط سے باغیوں کو باہر نکال دیا ہے۔ وسطی المخا کے کئی اہم شہروں اور شاہراؤں پر حکومتی فورسز کا کنٹرول ہے۔ حکومتی فوج کی پیش قدمی کے بعد علی صالح کے وفادار اور ایران نواز حوثی باغی فرار ہو رہے ہیں۔

مقامی ذرائع کے مطابق المخا شہر کے وسطی علاقوں سے باغیوں کو نکالنے کے لیے فوج کی جانب سے بھرپور طاقت کا استعمال کیا گیا۔ اس وقت بھی شہر کے شمالی اور مغربی اطراف میں حکومتی فورسز اور باغیوں کے درمیان گھمسان کی جنگ کی اطلاعات ہیں۔

ادھر مغربی یمن کے علاقے الحدیدہ میں الطایف، النخیلہ اور زبید کے مقامات پر عرب اتحادی طیاروں اور اپاچی ہیلی کاپٹروں کے ذریعے باغیوں کے ٹھکانوں پر بمباری کی ہے۔

اتحادی فوج نے المخا بندرگاہ، جبل شبکہ، معسکر خالد اور دیگر مقامات پر بھی حوثی باغیوں اور مںحرف سابق صدر علی صالح کے حامی مسلح باغیوں کے مراکز کو نشانہ بنایا ہے۔

الحدیدہ گورنری کے نواحی علاقے اللحیہ ڈاریکٹوریت، میدی اور سعودی عرب کی سرحد سے متصل حجہ گورنری میں بھی باغیوں کے ٹھکانوں پر گولہ باری کی گئی۔

یمن کے عسکری ذرائع کا کہنا ہے کہ گذشتہ روز صعدہ گورنری اور اس کے اطراف میں البقع، الفرع اور پہاڑی علاقوں میں باغیوں کے خلاف جاری کارروائی کے دوران کم سے کم 26 جنگجو ہلاک ہوگئے۔ مقتولین میں حوثیوں کا اہم فیلڈ کمانڈر محمد مہدی البرطی بھی شامل ہے۔

یمنی فوج نے جنوب مشرقی تعز میں علی صالح اور حوثی باغیوں کا ایک مشترکہ حملہ بھی پسپا کردیا۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں