امریکا : مہاجرین سے متعلق آرڈر کی معطلی کے خلاف ٹرمپ کی اپیل مسترد

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

امریکا میں ایک اپیل کورٹ نے متفقہ طور پر صدر ڈونلڈ ٹرمپ کے اس ایگزیکٹو آرڈر پر عمل درامد کو معطل کرنے کا فیصلہ برقرار رکھا ہے جس کے تحت امریکی صدر نے سات مسلم اکثریتی ممالک کے شہریوں پر امریکا میں داخلے پر پابندی عائد کر دی تھی۔ کورٹ نے ٹرمپ انتظامیہ کی جانب سے کی جانے والی اپیل کو مسترد کر دیا ہے۔

دوسری جانب امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے مذکورہ فیصلے پر تبصرہ کرتے ہوئے اپنی ٹوئیٹ میں کہا ہے کہ " آپ لوگوں کو میں عدالت میں دیکھوں گا.. قوم کی سلامتی خطرے میں ہے"۔

غالب گمان ہے کہ اس مقدمے کا حتمی فیصلہ امریکی سپریم کورٹ کے ذریعے سامنے آئے گا۔

ڈونلڈ ٹرمپ نے 27 جنوری کو ایک ایگزیکٹو آرڈر کے ذریعے ايران ، عراق ، ليبيا ، صومالیہ ، سوڈان ، شام اور یمن کے شہریوں پر 90 روز کے لیے امریکا میں داخلے پر پابندی لگا دی تھی۔ فیصلے کے تحت دنیا بھر کے پناہ گزینوں کا 120 روز تک امریکا میں داخلہ ممنوع قرار دیا گیا ما سوا شام کے پناہ گزینوں کے جن پر غیر معینہ مدت کے لیے پابندی عائد کی گئی ہے۔

گزشتہ جمعے کے روز امریکی وفاقی عدالت کے جج جیمس روبرٹ نے ٹرمپ کے آرڈر کو عارضی طور پر معطل کر دیا تھا۔ اب امریکی اپیل کورٹ نے بھی وفاقی عدالت کے مذکورہ فیصلے کی تائید کر دی ہے۔

ٹرمپ نے وفاقی جج کے فیصلے کے خلاف اپیل دائر کرتے ہوئے جج کو " جج نما" اور اس فیصلے کو ایک "اسکینڈل" قرار دیا تھا۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں