آسٹریلیا : داعش کے بدنام زمانہ جنگجو کی شہریت منسوخ

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

آسٹریلوی حکومت نے داعش کی صفوں میں شامل ہو کر لڑنے والے جنگجو خالد شیروف کی شہریت منسوخ کرنے کا فیصلہ کیا ہے۔

ایک آسٹریلوی اخبار کی رپورٹ کے مطابق خالد شیروف ملک کا پہلا شہری ہے جس کی انسداد دہشت گردی کے قوانین کے تحت شہریت منسوخ کی گئی ہے۔ لبنانی نژاد خالد دُہری شہریت کا حامل ہے۔

آسٹریلیا میں 2015ء سے نافذ ایک قانون کے تحت حکومت دُہری شہریت کے حامل افراد کی کسی جنگی کارروائی میں ملوّث ہونے یا کسی کالعدم تنظیم میں شمولیت کی صورت میں شہریت منسوخ کر سکتی ہے۔

خالد شیروف ایک لبنانی تارک وطن کا بیٹا ہے۔اس نے 2014ء میں اس وقت عالمی سطح پر شہرت حاصل کی تھی جب اس کی اور اس کے سات سالہ بیٹے کی تصاویر انٹر نیٹ کے ذریعے منظرعام پر آئی تھیں۔ان تصاویر میں دونوں نے بے دردی سے ذبح کیے گئے شامی فوجیوں کے کٹے ہوئے سر پکڑ رکھے تھے۔

آسٹریلیا کے محکمہ امیگریشن کے ایک ترجمان نے برطانوی خبررساں ادارے رائیٹرز کو بتایا ہے کہ ایک شخص کو شہریت سے محروم کردیا گیا ہے لیکن انھوں نے مزید تفصیل بتانے سے گریز کیا ہے۔

واضح رہے کہ آسٹریلیا عراق اور شام میں داعش کے خلاف جنگ میں امریکا کا مضبوط اتحادی ہے اور اس کے لڑاکا طیارے بھی داعش کے خلاف فضائی مہم میں شریک ہیں۔آسٹریلوی حکومت نے ملک میں سخت گیرمسلمانوں کے ممکنہ حملوں سے بچنے کے لیے سکیورٹی ہائی الرٹ کررکھی ہے جبکہ ملک میں مشرقِ وسطیٰ کے ممالک سے لوٹنے والے جنگجوؤں کے حملوں کا بھی خطرہ ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں