.

پانچ سو کلو وزنی مصری لڑکی علاج کے لیے بھارت منتقل

ایمان کے سفر کے لیے خصوصی کار اور ہوائی جہاز کا اہتمام کیا گیا

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

مصر میں موٹاپے کی خطرناک بیماری میں مبتلا 36 سالہ ایمان عبدالعاطی کو علاج کے لیے بھارت لایا گیا ہے۔

العربیہ ڈاٹ نیٹ کے مطابق ایمان عبدالعاطی کو اس کے آبائی شہر اسکندریہ کے برج العرب ہوائی اڈے سے خصوصی طیارے کے ذریعے بھارت کے شہر ممبئی لایا گیا۔ ایمان کا وزن اس وقت 500 کلوگرام پہنچ چکا ہے، مصر کے اسپتالوں میں ایمان کی بیماری کا علاج نہیں کیا جاسکا۔

مصری ایئرلائن کے چیئرمین صفوت مسلم نے بتایا کہ شہری ہوابازی کے وزیر شریف فتحی کی خصوصی ہدایت پر موٹاپے کے شکار لڑکی کو بھارت لے جانے کے لیے خصوصی پرواز کا اہتمام کیا گیا۔ جس کے بعد اسے براہ راست اسکندریہ سے بھارت کے شہر ممبئی منتقل کیا گیا ہے۔

موٹاپے اور بھاری بھرکم حجم کی وجہ سے ایمان عبدالعاطی کو ہوائی جہاز کے دروازے سے اندر لے جانا مشکل تھا۔ اس لیے جہاز میں خصوصی دروازہ تیار کیا گیا۔

صفوت مسلم کا کہنا ہے کہ مریضہ کی حالت کے پیش نظر اس کی انتہائی نگہداشت کی ضرورت ہے۔ سفر کے دوران بھی اسے انتہائی احتیاط کے ساتھ ایک خاص ماحول میں رکھنے کی ہدایت کی گئی تھی۔ اسے گھر سے ہوائی جہاز تک لے جانے کے لیے خصوصی کار تیار کی گئی تھی۔

مصری ایئرلائن کے ہواباز باسم جوہر نے کہا کہا کہ موٹاپے میں مبتلا مریضہ دوران پرواز جدید ترین سفری سہولیات کے ساتھ ہرقسم کی طبی سہولت بھی مہیا کی گئی ہے۔ بھارت میں علاج کے لیے سفر کے دوران ایمان عبدالعاطی کے ہمراہ اس کی ہمشیرہ اور مصری ڈاکٹروں کی ایک ٹیم بھی موجود ہے۔ ممبئی کے اسپتال میں لے جانے کے بھی اسپتال کا ایک ہنگامی راستہ بنایا گیا تھا اور اسے کرین کی مدد سے اسپتال میں پہنچایا گیا۔

حال ہی میں ایمان کی بہن شيماء احمد عبدالعاطی نے "العربیہ ڈاٹ نیٹ" کو بتایا تھا کہ ایمان 1980 میں پیدا ہوئی تو اس کا وزن 5 کلو گرام تھا۔ وہ بچپن سے ہی موٹاپے کا شکار تھی جس میں وقت کے ساتھ تیزی سے اضافہ ہوتا چلا گیا۔ اس دوران متعدد بڑے ڈاکٹروں کو معائنہ کرایا گیا جن کے مطابق ایمان ہارمون کے بہت بڑے بگاڑ سے دوچار تھی جس کے نتیجے میں اس کا وزن خوف ناک حد تک بڑھ گیا۔