.

ٹرمپ اور ایبے کے درمیان طویل ترین مصافحہ

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

وہائٹ ہاؤس میں پروٹوکول کے تحت امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ اور جاپانی وزیر اعظم شنزو ایبے کے درمیان اپنی نوعیت کا طویل ترین مصافحہ دیکھنے میں آیا۔

جمعے کے روز دونوں شخصیات کے درمیان ملاقات کی وڈیو میں ایبے تقریبا 20 سیکنڈ تک زور کے ساتھ ٹرمپ کا ہاتھ پکڑے رہے۔ جب ٹرمپ نے ایبے سے پوچھا کہ جاپانی کیمرہ مین کیا کہہ رہے ہیں تو انہوں نے چند سیکنڈ بعد جواب میں کہا " مہربانی فرما کر میری طرف دیکھیے"۔ تاہم ایبے نے یہ واضح نہیں کیا کہ آیا وہ کیمرہ مینوں کی بات کا ترجمہ کر رہے تھے یا انہوں نے خود ٹرمپ سے اپنی جانب دیکھنے کی درخواست کی۔

اس طویل مصافحے کے بعد ٹرمپ نے تبصرہ کرتے ہوئے کہا " ان کے دو طاقت ور ہاتھ ہیں"۔

دو روزہ بات چیت میں دونوں شخصیات نے جاپان اور امریکا کے درمیان شراکت داری کو مضبوط بنانے کے طریقہ کار پر تبادلہ خیال کیا۔ واضح رہے کہ ٹرمپ کے کرسی صدارت پر پہنچنے کے بعد ٹوکیو کو واشنگٹن کے ساتھ اپنے تعلقات کے متاثر ہونے کا اندیشہ پیدا ہو گیا تھا۔

واشنگٹن میں بات چیت کے مکمل ہونے کے بعد ٹرمپ نے جاپانی مہمان کو فلوریڈا میں اپنے ذاتی تفریحی مقام "مارلیگو" پر گولف کھیلنے کی دعوت دی۔