.

فلن کے نامزد جانشین نے تہران میں پڑھا اور امارات میں کام کیا

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

امریکا کی ٹرمپ انتظامیہ نے قومی سلامتی کے مشیر کا منصب سابق وائس ایڈمرل روبرٹ ہارورڈ کو دینے کی پیش کش کی ہے۔ امریکی انٹیلی جنس کے سابق ذمے دار مائیکل فلن کے مستعفی ہونے کے بعد یہ عہدہ خالی ہو گیا ہے۔

ذرائع کے مطابق فوری طور پر یہ واضح نہیں ہو سکا کہ امریکا کی سنٹرل کمان کے سابق نائب کمان دار نے اس پیش کش کو قبول کیا ہے یا نہیں۔ واائٹ ہاؤس کے ترجمان کی جانب سے اس سلسلے میں ابھی کوئی تبصرہ سامنے نہیں آیا۔

روبرٹ ہارورڈ 1979 میں شاہ ایران کی حکومت کے سقوط سے قبل تہران میں تعلیم حاصل کر چکے ہیں۔ سابق امریکی صدر جارج بش جونیئر کے دور میں وہ قومی سلامتی کونسل میں کام کر چکے ہیں۔ وہ بحریہ کی جانب سے لڑنے کا تجربہ بھی رکھتے ہیں۔ ماضی میں وہ عراق اور افغانستان میں خدمات سر انجام دے چکے ہیں۔

ہارورڈ اس وقت دفاعی ساز و سامان تیار کرنے والی معروف کمپنی لاک ہیڈ مارٹن میں ایک انتظامی عہدے پر فائز ہیں۔ وہ متحدہ عرب امارات اور مشرق وسطیٰ میں کمپنی کی سرگرمیوں کی نگرانی کرتے ہیں۔