.

ایرانی ٹیم کی حج سے متعلق امور پر بات چیت کے لیے سعودی عرب آمد

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

ایران نے اپنے شہریوں کو اس سال حج پر بھیجنے سے متعلق امور پر بات چیت کے لیے ایک ٹیم سعودی عرب بھیجی ہے۔

ایران کے وزیر ثقافت رضا صالحی امیری نے سرکاری ٹیلی ویژن سے نشر ہونے والے ایک بیان میں اس ٹیم کو سعودی عرب بھیجنے کی اطلاع دی ہے اور کہا ہے کہ ’’اگر سعودی عرب ہماری شرائط کو تسلیم کرتا ہے تو ایران کی اس سال کی پالیسی یہ ہے کہ عازمین کو حج پر بھیجا جائے گا‘‘۔

گذشتہ سال کے اوائل میں تہران میں سعودی سفارت خانے اور مشہد میں قونصل خانے پر مشتعل مظاہرین کے حملے کے بعد دونوں ملکوں میں کشیدگی پیدا ہوگئی تھی جس کے بعد ایران نے حج کے لیے سرکاری وفد نہیں بھیجا تھا۔

گذشتہ تین عشروں میں یہ پہلا موقع تھا کہ ایرانی عازمین نے حج نہیں کیا تھا اور اس کے بعد دونوں ملکوں کے درمیان شام اور یمن کے تنازعے پر سخت تناؤ پیدا ہوگیا تھا۔ گذشتہ سال ایرانی عازمین کو حج پر بھیجنے کے بارے میں دونوں ملکوں کے درمیان مذاکرات ویزوں کے اجرأ اور سکیورٹی کے معاملے پر اختلافات کی وجہ سے نتیجہ خیز ثابت نہیں ہوسکے تھے۔