.

امریکی فوجی کی بیوہ کے آنسوؤں نے کانگریس کو ہِلا دیا

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

گزشتہ ماہ یمن کے صوبے البیضاء میں امریکی فوجی کارروائی ابھی تک موضوع بحث بںی ہوئی ہے بالخصوص اس سلسلے میں امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ کی انتظامیہ کو بعض حلقوں کی جانب سے تنقید کا نشانہ بھی بنایا گیا۔ تاہم منگل کی شب سامنے آنے والے منظر اور مذکورہ کارروائی میں مارے جانے والے امریکی فوجی کی بیوہ کے آنسوؤں نے دیگر تمام منظر نامے کو چُھپا دیا۔ ٹوئیٹر پر مذکورہ فوجی کی بیوہ کی وڈیو اور تصاویر زیر گردش ہیں جن میں اُس کے چہرے پر آنسو بہتے ہوئے نظر آ رہے ہیں جب کہ امریکی صدر کی بیٹی ایوانکا ٹرمپ اس بیوہ کے ایک جانب کھڑی ہے۔ بیوہ کے آنسوؤں نے امریکی کانگریس کو ہِلا کر رکھ دیا اور اُس کے ارکان مارے جانے والے فوجی کو سلام پیش کرنے کے لیے کھڑے ہونے پر مجبور ہو گئے۔ ٹرمپ نے اپنے خطاب میں اس امریکی فوجی کو قومی ہیرو قرار دیا جس نے دہشت گرد تنظیم کے خلاف لڑتے ہوئے اپنی جان دی۔

منگل کی شام کانگریس میں اپنے پہلے خطاب کے دوران ٹرمپ نے یمن میں امریکی حملے کو سراہتے ہوئے کہا کہ یہ ایک کامیاب کارروائی تھی اور اس دوران وہاں القاعدہ تنظیم کی شاخ کے بارے میں اہم معلومات بھی حاصل ہوئیں۔

یاد رہے کہ 29 جنوری کو یمن کے صوبے البیضاء میں القاعدہ تنظیم کو نشانہ بنانے کے لیے کی جانے والی کارروائی میں امریکی ذمے داران کے مطابق 14 شدت پسندوں کے علاوہ بعض شہری بھی ہلاک ہوئے۔ دوسری جانب موقع پر موجود طبی معاونین کے مطابق حملے میں تقریبا 30 افراد جاں بحق ہوئے جن میں دس عورتیں اور بچے شامل ہیں۔

فوجی کی بیوہ رو پڑی

کانگریس کے ہال میں ڈونلڈ ٹرمپ نے کیرین اوینز کا تعارف کرایا جو امریکی بحریہ کی اسپیشل فورسز کے اہل کار ولیم اوینز کی بیوہ ہے۔ ٹرمپ نے یمن میں کارروائی کے دوران مارے جانے والے ولیم کو خراج تحسین پیش کرتے ہوئے اسے ہیرو قرار دیا۔ اس دوران کیرین اپنے جذبات پر قابو نہیں رکھ سکی اور اس کی آنکھوں سے آنسو جاری ہو گئے۔ کیرین نے کھڑے ہو کر کچھ دیر کے لیے آنکھیں موند لیں اور اس دوران ارکان کانگریس کھڑے ہو کر تالیاں بجاتے رہے۔ یہ ٹرمپ کے پورے خطاب کے دوران سب سے زیادہ متاثر کن منظر تھا۔

واضح رہے کہ امریکی فوجی کے والد بیل اوینز نے گزشتہ ہفتے کئی اخباری انٹرویو میں مذکورہ امریکی کارروائی کو "احمقانہ" قرار دیتے ہوئے اس کارروائی کی تحقیقات کرنے کا مطالبہ کیا.. ساتھ ہی انہوں نے امریکی صدر پر زور دیا کہ وہ اوینز کی موت سے فائدہ نہ اٹھائیں۔