.

ترکی : شامی ہواباز زخمی حالت میں سرحد کے نزدیک مل گیا

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

ترکی میں حکام نے اتوار کی صبح شامی لڑاکا طیارے کے اُس ہواباز کو تلاش کر لیا جس نے اپنے طیارے کے گرنے سے قبل پیرا شوٹ کے ذریعے چھلانگ لگا دی تھی۔ شامی حکومت کے زیر انتظام فضائیہ کا یہ طیارہ ہفتے کے روز ملک کے جنوبی صوبے ہاتے میں انتاکیہ کے نواحی علاقے میں گر کر تباہ ہو گیا تھا۔ شامی سرحد کے نزدیک ترکی کی سرحد کے اندر پیراشوٹ کے ملنے کے بعد ہواباز کی تلاش شروع کی گئی اور 9 گھنٹوں کے سرچ آپریشن کے بعد وہ اپنے پیرا شوٹ کے مقام سے تقریبا 500 میٹر دور زخمی حالت میں مل گیا۔

ذرائع کے مطابق ابتدائی طبی امداد فراہم کیے جانے کے بعد شامی ہواباز کو علاج کے لیے ہاتے کے سرکاری ہستپال منتقل کر دیا گیا۔ ذرائع نے تصدیق کی ہے کہ تباہ ہونے والے طیارے میں ایک ہواباز سوار تھا۔

شام میں بشار حکومت نے ہفتے کی شام فضائیہ کے ایک "میگ - 21" طیارے کے ہواباز سے رابطہ منقطع ہو جانے کا اعلان کیا تھا۔

اس سے قبل مسلح شامی اپوزیشن نے اعلان کیا تھا کہ اُس نے ترکی کے ساتھ سرحد کے نزدیک ملک کے شمال مغربی صوبے ادلب کے نواحی علاقے میں شامی حکومت کا ایک لڑاکا طیارہ مار گرایا ہے۔ شامی اپوزیشن کی ایک تحریک "احرار الشام" کے ترجمان علی قرہ نے ترک نیوز ایجنسی اناضول کو بتایا کہ ادلب کے نواح میں طیارے کو طیارہ شکن میزائل سے نشانہ بنایا گیا تو اُس وقت وہ فضا میں نیچی پرواز کر رہا تھا۔ کارروائی کے بعد طیارے کو زمین پر گرتے ہوئے دیکھا گیا۔

یاد رہے کہ ترکی کے وزیراعظم بن علی یلدرم نے اعلان کیا تھا کہ ترکی اور شام کی مشرترکہ سرحد کے نزدیک شام کے اندر ایک میگ – 21 طیارہ گر کر تباہ ہو گیا ہے۔ ہفتے کے روز یلدرم کا کہنا تھا کہ ہواباز کی تلاش جاری ہے۔ ترک وزیراعظم کے مطابق طیارہ گرنے کا سبب واضح نہیں البتہ غالب گمان ہے کہ موسم کی صورت حال حادثے کی وجہ ہو۔