.

یمن: حوثیوں کی جانب سے ہراسیت، "طبیبانِ بلا سرحد" تنظیم کا کُوچ

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

یمن میں مقامی انتظامیہ کے وزیر عبدالرقیب فتح نے اعلان کیا ہے کہ وسطی صوبے اِب میں الثورہ ہسپتال میں Doctors Without Borders یا "طبیبانِ بلا سرحد" تنظیم کے وفد کو حوثیوں کی جانب سے ہراساں کیے جانے کے نتیجے میں تنظیم کا وفد بدھ کی شام کوچ کر گیا۔

ادھر یمن میں طبیبانِ بلا سرحد پروگرام کے ڈائریکٹر ہیگ روبرٹ نے جمعرات کے روز بتایا کہ بین الاقوامی طبی تنظیم خومختاری کے ساتھ سرگرمیاں انجام نہ دینے کے باعث اِب صوبے میں اپنا کام روک دینے پر مجبور ہوئی۔ روبرٹ نے فیصلے کو مشکل قرار دیتے ہوئے کہا کہ کوچ کا عمل فوری طور پر نہیں ہوگا بلکہ آئندہ تین ماہ کے دوران بتدریج عمل میں آئے گا۔

رابرٹ نے باور کرایا کہ تنظیم نے جنوری 2016 سے اِب کے الثورہ ہسپتال میں ہنگامی نوعیت کی طبی اور جان بچانے والی سرگرمیاں انجام دے رہی ہے اور گزشتہ برس تنظیم کے ذریعے 41 ہزار سے زیادہ مریضوں کا علاج کیا گیا۔

پروگرام ڈائریکٹر کے مطابق "ان کی سرگرمیاں انسانی بنیادوں پر خودمختار بین الاقوامی طبی سرگرمیاں ہیں۔ تنظیم مذہبی، قبائلی، سیاسی، نظریاتی اور کسی بھی دوسری وابستگی سے قطع نظر غیر جانب دارانہ طور پر ہر ضرورت مند کو بلا امتیاز مفت طبی خدمات فراہم کرتی ہے"۔ انہوں نے باور کرایا کہ "طبیبانِ بلا سرحد" تنظیم اب بھی یمنی عوام کے ساتھ وابستہ ہے اور آٹھ صوبوں میں اپنی سرگرمیاں مکمل کرے گی۔