.

"عزم کی آندھی" سے یمن کی 85% اراضی پر کنٹرول : بن دغر

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

یمن کے وزیر اعظم احمد عبید بن دغر کا کہنا ہے کہ دو سال قبل شروع ہونے والے فوجی آپریشن "عزم کی آندھی" کے ذریعے اُس اراضی کا 85% حصہ واپس لیا جا چکا ہے جس پر حوثیوں اور ان کے حلیفوں نے قبضہ کر لیا تھا۔

یمن کی سرکاری خبر رساں ایجنسی سبا کے مطابق بن دغر نے واضح کیا کہ مذکورہ فوجی آپریشن بغاوت کے خاتمے اور یمن میں ایرانی منصوبے پر پانی پھیر دینے کے مرکزی ہدف کو پورا کرنے کے قریب پہنچ چکا ہے۔

یمنی وزیراعظم نے حوثیوں اور سابق صدر علی عبداللہ صالح کی فورسز کو ایران کا آلہ کار قرار دیا جو تہران میں موجود اپنے آقاؤں کا منصوبہ مسلط کرنے کے لیے کوشاں ہیں۔ انہوں نے کہا کہ وقت آ گیا ہے کہ ایران اس حقیقت کو جان لے کہ "عزم کی آندھی" کے بعد عرب وہ نہیں رہے جیسا کہ آپریشن سے پہلے تھے اور ایران کی دشمنانہ پالیسی جاری رہنا اب قابلِ قبول نہیں رہا۔

بن دغر نے باور کرایا کہ یمنی عوام بغاوت کے خاتمے کے حوالے سے اپنے خواب اور امیدوں کی تکمیل کے قریب پہنچ چکے ہیں اور سرکاری فوج صنعاء کے اطراف موجود ہے۔