.

حوثی باغیوں نے امدادی سامان سے لدے دسیوں ٹرک ضبط کر لیے

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

یمن کے ایرانی حمایت یافتہ حوثی شدت پسندں نے عدن بندرگاہ اور الودیعہ کے مقام سے امدادی سامان کے کرآنے والے دسیوں ٹرک قبضے میں لے لیے ہیں۔ العربیہ ڈاٹ نیٹ کے مطابق ٹرکوں کو قبضے میں لینے کا مقصد ان پر کسٹم ٹیکس نافذ کرنا ہے۔

یمن کی سرکاری خبر رساں ایجنسی’سبا‘ کے مطاق جمعہ کے روز عدن بندرگاہ اور الودیعہ گذرگاہ سے امدادی سامان لے کر جانے والے ٹرکوں کو وسطی شہر الذمار میں باغیوں کے زیر تسلط حکومتی کمپلیکس کے سامنے روک دیا گیا ہے۔

رپورٹ کے مطابق حوثیوں کی طرف سے یہ اقدام جنوبی صنعاء سے متصل الذمار شہر میں کسٹم ٹیکس کی وصولی کا ایک نیا مرکز قائم کرنے کے لیے کیا گیا ہے۔ باغی دوسرے شہروں سے امدادی سامان لانے والے ٹرکوں پر بھی ٹیکس لگا کر لوٹ مار کر رہے ہیں۔ جب سے یمنی حکومت نے مرکزی بنک عبوری دارالحکومت عدن منتقل کیا ہے باغیوں کو شدید مالی مشکلات کا سامنا ہے۔ وہ امدادی سامان کی لوٹ مار کے ساتھ ساتھ عوام پر نام نہاد ٹیکسوں کا بوجھ ڈال کر مالی مسائل حل کرنے کی کوششیں کر رہے ہیں۔