.

پاپائے روم : مصر میں پام سنڈے پر دہشت گردی کی مذمت ،ہلاکتوں پر اظہارِافسوس

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

رومن کیتھو لک کے روحانی پیشوا پوپ فرانسیس نے مصر میں پام سنڈے کی تقریبات کے دوران میں قبطی عیسائیوں کے گرجا گھروں پر تباہ کن بم حملوں کی مذمت کی ہے اور ان میں ہلاکتوں پر گہرے دکھ اور افسوس کا اظہار کیا ہے۔

مصر میں یہ بم دھماکے پوپ فرانسیس کے قاہرہ کے طے شدہ دورے سے چند ہفتے قبل ہوئے ہیں۔انھوں نے مصر کے قبطی عیسائیوں کے روحانی پیشوا پوپ تواضروس دوم سے ان بم دھماکوں میں چوالیس انسانی جانوں کے ضیاع پر گہرے دکھ اور افسوس کا اظہار کیا ہے اور ان کے نام تعزیتی پیغام میں انھیں اپنا بھائی قراردیا ہے۔انھوں نے تمام مصری قوم کے نام پیغام میں بم دھماکوں کی مذمت کی ہے اور کہا ہے کہ وہ زخمیوں کی جلد صحت یابی کے لیے دعاگو ہیں۔

مصر میں ان بم دھماکوں کے چند گھنٹے کے بعد پاپائے روم خود بھی ویٹی کن کے سینٹ پیٹرز اسکوائر میں پام سنڈے کی تقریب میں شریک تھے۔انھوں نے اللہ سے دعا کی کہ ’’ وہ ان لوگوں کے دلوں کو پھیر دے جو دہشت گردی ،تشدد اور ہلاکتوں کو پھیلا رہے ہیں‘‘۔انھوں نے خدا سے ان لوگوں کے دلوں کو بھی پھیرنے کی دعا کی ہے ’’جو ہتھیار تیار کرتے اور انھیں ایک جگہ سے دوسری جگہ پہنچاتے ہیں‘‘۔

پوپ فرانسیس پام سنڈے کی تقریب کے دوران میں سویڈن کے دارالحکومت اسٹاک ہوم میں جمعے کی شب حملے کے مقتولین کے لیے دعا کررہے تھے۔اس دوران میں انھیں ایک کاغذ پر مصر کے شہر طنطا میں قبطی عیسائیوں کے ایک چرچ پر بم حملے کی اطلاع دی گئی تھی۔اس کے بعد مصر کے دوسرے بڑے شہر اسکندریہ میں ایک قبطی چرچ کے باہر بم دھماکا ہوا تھا۔

پاپائے روم نے اپنے خطبے میں آج کی دنیا میں جبری مزدوری کرنے والے افراد سے لے کر خاندانی المیوں ،بمباریوں ،جنگوں اور دہشت گردی کے حملوں اور مسلح تنازعات کا ایندھن بننے والے لوگوں کے مصائب کا تذکرہ کیا اور ان کے مصائب اور مشکلات کے ازالے کی دعا کی۔

سینٹ پیٹرز اسکوائر میں پام سنڈے کی تقریب کے موقع سکیورٹی کے سخت انتظامات کیے گئے تھے اور اس جانب آنے والی شاہراہوں کو بند کردیا گیا تھا جبکہ آنے والے افراد کی تلاشی لی گئی تھی۔واضح رہے کہ دنیا بھر کی عیسائی برادری حضرت عیسیٰ علیہ السلام کے بیت المقدس میں فاتحانہ داخلے کی خوشی میں پام سنڈے کا تیوہار مناتی ہے اور اپریل میں دوسری اتوار کو گرجا گھروں میں خصوصی دعائیہ تقریبات منعقد کی جاتی ہیں۔