.

فلپائنی ابو سیاف گروپ نے ایک یرغمالی کا سرقلم کردیا

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

فلپائن کی فوج کی طرف سے جاری کردہ ایک بیان میں کہا گیا ہے کہ شدت پسند گروپ ’داعش‘ سے وابستہ ابو سیاف تنظیم نے گذشتہ برس دسمبر میں یرغمال بنائے گئے چار شکاریوں میں سے ایک کا سر قلم کردیا ہے۔

فلپائنی فوج کے جزیرہ گولو کے عسکری کمانڈر بریگیڈیئر جنرل سیریلیتو سوبیگانا نے ایک بیان میں بتایا کہ ابو سیاف کے جنگجوؤں نے گذشتہ برس دسمبر میں یرغمال بنائے چار ماہی گیروں میں سے ایک کو قتل کردیا ہے۔ بیان میں کہا گیا ہے کہ ابو سیاف کے جنگجوؤں نے یرغمال بنائے گئے کشتی کے کپتان کو گذشتہ جمعرات کے روز قتل کیا تاہم اس کی لاش واپس نہیں کی گئی۔

خیال رہے کہ ابو سیاف نامی شدت پسند گروپ نے گذشتہ برس دسمبر میں بحر سلبیس کے قریب ایک کشتی پر سوار چار ماہی گیروں کو یرغمال بنا لیا تھا۔ کشتی پر اس کے کپتان نویل بیکسونڈی اور تین دیگر افراد سوار تھے۔

فلپائن میں سرگرم تنظیم ابو سیاف تعداد کے اعتبار سے ایک چھوٹا گروپ ہے مگر شہریوں کے اغواء اور ان کے بےرحمانہ قتل، بلیک میلنگ اور تشدد کی وجہ سے کافی مشہور ہے۔ کچھ عرصہ قبل اسی گروپ نے پاکستان میں العربیہ کے بیورو چیف بکرعطیانی کو بھی یرغمال بنا لیا تھا۔ عطیانی کو ڈیڑھ سال تک یرغمال رکھا گیا۔

فلپائنی فوجی افسر کاکہنا ہے کہ جزیرہ نما گولو میں ابو سیاف نے ایک کشتی سے یرغمال بنائے تین ماہی گیروں سمیت 12 غیر ملکیوں کو یرغمال بنا رکھا ہے۔

گذشتہ بدھ کو فلپائنی فوج کی طرف سے جاری کردہ ایک بیان میں کہا گیا تھا کہ کینیڈا اور جرمن سیاحوں کے اغواء اور قتل سمیت دہشت گردی کی دیگر وارداتوں میں ملوث ابو سیاف کا اہم کمانڈر ہلاک ہوگیا ہے۔