.

شاہ سلمان کی جانب سے شدت پسندی کے انسداد کے عالمی مرکز کا اعلان

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

سعودی فرماں روا شاہ سلمان بن عبدالعزیز نے اتوار کے روز امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ کی موجودگی میں شدت پسندی کے انسداد کے عالمی مرکز کے افتتاح کا اعلان کر دیا۔ یہ مرکز سعودی عرب کی جانب سے دہشت گردی کے خلاف جنگ کے لیے شروع کیے جانے والے منصوبے کا حصہ ہے۔

مرکز کے قیام کا مقصد شدت پسند نظریات کو پھیلنے سے روکنا ہے۔ اس واسطے رواداری کو مضبوط بنانے اور مثبت مکالمے کو فروغ دینے کی پالیسی کا سہارا لیا جائے گا۔

سعودی عرب نے دہشت گردی کے خلاف برسرِ جنگ رہتے ہوئے کئی منصوبے شروع کیے۔ اس کے علاوہ شدت پسند نظریات پر قابو پانے کے لیے خصوصی مراکز بھی قائم کیے گئے۔

سال 2005ء میں ریاض نے انسدادِ دہشت گردی کی بین الاقوامی کانفرنس کی میزبانی کی تھی۔

سعودی عرب وہ پہلا ملکت تھا جس نے 2000ء میں بین الاقوامی دہشت گردی کے انسداد کے معاہدے پر دستخط کیے تھے۔ مملکت دہشت گردی کے مظاہر کے مطالعے کے واسطے بہت زیادہ کوششیں کر رہی ہے۔

علاوہ ازیں سعودی عرب میں شدت پسند نظریات کا شکار بننے والے افراد کو معمول کی زندگی کی طرف واپس لانے کے لیے مرکز کا قیام بھی عمل میں آیا۔