.

یمنی فوج نے تعز میں مرکزی بینک کا کنٹرول حاصل کر لیا

تعز کے رہائشی علاقوں پر حوثیوں کی گولہ باری جاری ، متعدد ہلاک اور زخمی

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

یمن کی قومی فوج نے بدھ کے روز تیسرے بڑے شہر تعز کے مشرقی حصے میں واقع سینٹرل بینک کی متعدد شاخوں کا مکمل کنٹرول حاصل کر لیا۔ عوامی محل کے اردگرد دوسری متعدد عمارتیں بھی سرکاری فوج کے قبضے میں آگئی ہیں۔ یمنی فوج نے حوثی ملیشیا اور معزول صدر علی عبداللہ صالح کے حامی باغیوں کے ساتھ خونریز لڑائی کے بعد یہ اہم کامیابی حاصل کی ہے۔

دوسری جانب یمن کی حوثی ملیشیا اور معزول صدر علی عبداللہ صالح کے وفادار جنگجوؤں نے تعز کے رہائشی علاقوں پر مسلسل تیسرے روز گولہ باری جاری رکھی ہوئی ہے جس کے نتیجے میں دسیوں شہری ہلاک اور زخمی ہوگئے ہیں۔ ان میں خواتین اور بچے بھی شامل ہیں۔

مقامی ذرائع کے مطابق حوثی جنگجوؤں اور ان کے اتحادیوں نے الضبوحا اور الکریمیہ چوک کے آس پاس کے علاقوں پر بدھ کے روز شدید گولہ باری کی ہے جس کے نتیجے میں نو افراد ہلاک اور متعدد زخمی ہوگئے ہیں۔

ادھر شہر کے مشرقی محاذ پر یمنی فوج اور حوثیوں کے درمیان جھڑپوں کی اطلاعات ملی ہیں۔اس محاذ پر پہلے حوثیوں اور ان کے اتحادیوں نے حملہ کیا تھا لیکن اس کو یمنی فوج اور عوامی مزاحمتی فورسز نے ناکام بنا دیا تھا۔ حوثی باغیوں نے شعبہ میڈیسن، التشریفات کیمپ اور الدعوہ کے علاقے پر حملہ کیا تھا۔

انھوں نے یمنی فوج اور عوامی مزاحمتی فورسز کو اپنے حملے میں نشانہ بنایا تھا اور شہر کے مشرقی اور وسطی علاقوں پر نئی گولہ باری کی ہے۔