.

جکارتہ میں خودکش بم دھماکا ،ایک پولیس اہلکار ہلاک ، 4 افراد زخمی

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

انڈونیشیا کے دارالحکومت جکارتہ میں ایک بس ٹرمینل کے نزدیک خودکش بم دھماکا ہوا ہے جس کے نتیجے میں ایک پولیس اہلکار ہلاک اور چار افراد زخمی ہوگئے ہیں۔

انڈونیشیا کی نیشنل پولیس کے نائب سربراہ سیف الدین نے ابتدائی تحقیقات کے حوالے سے بتایا ہے کہ بدھ کی رات مقامی وقت کے مطابق قریباً نو بجے ایک خودکش بمبار نے یہ دھماکا کیا ہے اور وہ بھی بم دھماکے میں مارا گیا ہے۔

انھوں نے مزید بتایا ہے کہ بم دھماکے کے وقت مقامی لوگوں کا ایک گروپ پریڈ کررہا تھا اور پولیس افسر اس کا پہرا دے رہے تھے۔

بم دھماکا جکارتہ کے مشرقی علاقے کمپونگ ملائیو میں واقع ایک بس ٹرمینل پر گاڑیاں کھڑی کرنے کی جگہ پر ہوا ہے۔زخمیوں کے بارے میں فوری طور پر متضاد اطلاعات سامنے آئی ہیں اور انڈونیشیا کے ٹی وی ون چینل نے دو شہریوں کے زخمی ہونے کی اطلاع دی ہے۔ان میں ایک طالبہ ہے۔

اس سے پہلے مشرقی جکارتہ کے پولیس سربراہ آندرے وبووو نےمیٹرو ٹی وی سے گفتگو کرتے ہوئے بس ٹرمینل کے نزدیک دو بم دھماکوں کی اطلاع دی تھی۔ سلطان محمد فردوس نامی ایک عینی شاہد نے بھی ایک ٹی وی چینل سے گفتگو کرتے ہوئے دو دھماکوں کی زور دار آوازیں سننے کی اطلاع دی تھی اور بتایا تھا کہ ان کے درمیان دس منٹ کا فرق تھا۔

واضح رہے کہ دنیا کے سب سے گنجان آباد مسلم ملک انڈونیشیا میں گذشتہ پندرہ سال کے دوران میں انتہا پسند اسلامی جنگجو گروپوں نے وقفے وقفے سے متعدد بم حملے کیے ہیں۔ گذشتہ سال جنوری میں جکارتہ ہی میں داعش کے جنگجوؤں نے ایک حملہ کیا تھا اور پولیس کی جوابی کارروائی میں چار جنگجو مارے گئے تھے۔داعش کی اس ملک میں دہشت گردی کی یہ پہلی کارروائی تھی۔