.

کیا قطری خبررساں ایجنسی ہیک ہوئی تھی؟ چار ثبوت کیا کہتے ہیں؟

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

قطر کی سرکاری خبررساں ایجنسی ( کیو این اے) نےامیرشیخ تمیم بن حمد آل ثانی کے متنازع بیانات کو جاری کیا تھا اور اس کے بعد کہا تھا کہ اس کی ویب سائٹ کو ہیک کر لیا گیا ہے۔

امیر قطر نے نیشنل سروسز کے آٹھویں بیچ کی گریجوایشن تقریب سے خطاب میں ایران ، حماس ،ا خوان المسلمون اور القاعدہ کے بارے میں اظہار خیال کیا تھا ۔ان کی اس تقریر کے مندرجات کیو این اے نے جاری کیے تھے۔بعد میں یہ اطلاع دی گئی تھی کہ اس ویب سائٹ کو ہیک کر لیا گیاہے۔یہاں چند ایک حقائق پیش کیے جاتے ہیں ،جن سے یہ ظاہر ہوتا ہے کہ یہ ویب سائٹ ہیک نہیں ہوئی تھی:

اوّل : قطری ٹیلی ویژن چینل نے شیخ تمیم کا بیان نیوز بلیٹن کے دوران میں نشر کیا تھا۔اس کے کئی گھنٹے کے بعد یہ کہا گیا تھا کہ ویب سائٹ ہیک ہو گئی ہے۔

دوم: قطری نیوز ایجنسی نے شیخ تمیم کا بیان عربی زبان میں اپنے انسٹا گرام کے اکاؤنٹ پر بھی جاری کیا تھا۔ یہاں یہ بھی واضح کرنا ضروری ہے کہ فیس بُک سے وابستہ اور سکیورٹی اطلاع والے انسٹا گرام کے اکاؤنٹ کو ہیک کرنا بہت مشکل ہوتا ہے۔

سوم: قطری نیوز ایجنسی نے انگریزی زبان میں انسٹا گرام کے اپنے اکاؤنٹ پر بھی شیخ تمیم کی تقریر کے مندرجات جاری کیے تھے ۔تاہم بعد میں انگریزی زبان کے اس تمام اکاؤنٹ کو غیر فعال کردیا گیا تھا۔

چہارم: کیو این اے نے امیر قطر شیخ تمیم کے بیانات کو اپنے گوگل پلس اکاؤنٹ پر بھی شائع کیا تھا۔ گوگل پلس اکاؤنٹ کو بھی ہیک کرنا کوئی آسان نہیں ہے جبکہ گوگل نے ہمیشہ اپنے اکاؤنٹس کو ہیک ہونے سے بچانے کے لیے سخت سکیورٹی اقدامات کی تعریف کی ہے۔