.

یہ سبزی موٹاپے کا سبب ہے !

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

سبزیاں کھائیں آپ بالکل ٹھیک رہیں گے.. یہ ہدایت بہت زیادہ دُہرائی جاتی ہے۔ جدید تحقیقی مطالعوں کے مطابق یہ ہدایت درست تو ہے مگر حتمی طور پر نہیں۔ نفسیات اور صحت کے امور سے متعلق ویب سائٹ "کیئر 2" کی رپورٹ کے مطابق درحقیقت آپ کی صحت اور جسمانی اہلیت کا انحصار اُن سبزیوں کی نوعیت پر ہے جو آپ کھاتے ہیں۔

حالیہ برسوں میں ہارورڈ یونی ورسٹی کی جانب سے کیے گئے تحقیقاتی مطالعے میں ایک مخصوص سبزی کو پتلی کمر سے محروم کرنے کا ذمے دار ٹھہرایا گیا ہے۔ یہ تحقیق 20 برسوں تک جاری رہی اور اس میں 1.3 لاکھ افراد کی یومیہ خوراک اور ہفتہ وار وزن کی فہرستیں تیار کر کے اُن کا جائزہ لیا گیا۔

حیرت انگیز طور پر ایک خاص سبزی لوگوں کو انتہائی موٹاپے کی طرف دھکیلنے کا سبب بن کر سامنے آئی.. آپ یقین کریں یا نہ کریں مگر اس کا نام "مکئی" ہے۔

مکئی کا ہمارے وزن پر منفی اثر کیوں پڑتا ہے ؟ اس کا جواب یہ ہے کہ " مکئی خون میں گلوکوز کی نسبت ہائیڈرو کاربوہائیڈریٹ کی حامل ہے۔ مکئی بھی آلو اور مٹر کی طرح نشاستہ اور گلوکوز پر مشتمل ہوتی ہے۔ اس کے نتیجے میں خون میں گلوکوز کی شرح میں شدید اضافہ ہو سکتا ہے۔

وقت گزرنے کے ساتھ خون میں گلوکوز کی غیر مستحکم سطحیں.. موٹاپے اور ذیابیطس کے خطرات میں اضافہ کر دیتی ہیں۔ تاہم پوپ کورن کی تھوڑی مقدار مسئلہ پیدا نہیں کرتی البتہ زیادہ پکی ہوئی صورت میں مکئی نقصان دہ ہے جو ہمارے روز مرہ کی خوراک کا حصہ بن جائے۔

روزانہ براہ راست یا بالواسطہ طور پر مکئی کا بڑے پیمانے پر استعمال کیا جاتا ہے۔ غذائی اشیاء کے اجزاء کی کسی بھی فہرست کا بغور جائزہ لیا جائے تو ان میں کارن آئل ، کارن سیرپ اور کارن اسٹارچ کے نام نمایاں طور پر نظر آئیں گے۔

اس کا یہ مطلب ہر گز نہیں کہ ہم مزے دار مکئی کے ذائقے سے لطف اندوز نہ ہوں۔

یقینا مکئی ہر جگہ ہمارے غذائی نظام کا اہم عنصر بن چکی ہے۔ اب یہ ہماری ذمے داری ہے کہ سائنسی تحقیق کے نتائج کی بنیاد پر ہم اپنے استعمال میں آنے والی مکئی کی مقدار کے حوالے سے زیادہ چوکنے رہیں۔