.

برطانیہ : انٹرنیٹ فرموں پر انتہا پسندانہ مواد ہٹانے کے لیے دباؤ بڑھانے پر غور

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

برطانیہ کے سکیورٹی کے وزیر بن ویلیس نے کہا ہے کہ انٹرنیٹ کمپنیوں پر انتہا پسندی پر مبنی مواد ہٹانے کے لیے مزید دباؤ برھانے سمیت مختلف اقدامات پر غور کیا جارہا ہے۔

برطانوی حکومت ماضی میں یہ شکایت کرچکی ہے کہ ٹیکنالوجی کمپنیاں انتہا پسندانہ نظریے کی تشہیر اور مشتبہ جنگجوؤں کے درمیان برقی مراسلت کو روکنے کے لیے مناسب اقدامات نہیں کررہی ہیں۔

بن ویلیس نے اتوار کے روز بی بی سی ٹیلی ویژن سے گفتگو کرتے ہوئے کہا ہے کہ ’’ ہم مختلف امکانات پر غور کررہے ہیں۔جرمنوں نے ایک بہتر تجویز پیش کی ہے ،ابھی ہمیں یہ یقین تو نہیں ہے کہ یہ قابل عمل بھی ہے لیکن ہم ان کمپنیوں پر مختلف دباؤ ڈال سکتے ہیں‘‘۔

انھوں نے کہا:’’ہمارے خیال میں وہ ( کمپنیاں) اپنے پاس موجود ٹیکنالوجی کی بدولت ان (انتہا پسندوں )کے مواد کو تبدیل کرنے کی صلاحیت رکھتی ہیں‘‘۔ان کا مزید کہنا تھا کہ ان میں سے ایک ایشو پوسٹ کیے گئے مواد کو آن لائن موجود اسی طرح کے مواد سے مربوط بنانا ہے۔

بن ویلیس کا مزیدکہنا تھا کہ بعض کمپنیاں اس معاملے میں مشکل میں تھیں لیکن اس بات کے بھی ثبوت ملے ہیں کہ بعض دوسری کمپنیاں اپنے کام کو بہتر بنانے پر غور کررہی تھیں۔