.

ڈونلڈ ٹرمپ کا السیسی کو فون، قطر کے معاملے پر بات چیت

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے خلیجی ریاست قطر کے ساتھ سفارتی تنازع پیدا ہونے کے بعد مصری صدر عبدالفتاح السیسی کو ٹیلیفون کیا ہے جس میں قطر کے معاملے پر تفیصلی تبادلہ خیال کیا گیا۔

العربیہ ڈاٹ نیٹ کے مطابق امریکی انتظامیہ کے ایک سینیر عہدیدار نے بتایا کہ صدر ٹرمپ نے اپنے مصری ہم منصب عبدالفتاح السیسی سے جمعہ کے روز ٹیلیفون پر بات چیت کی۔ دونوں رہ نماؤں کے درمیان قطر کے ساتھ پیدا ہونے والے بحران پر تفصیلی تبادلہ خیال ہوا۔ اس موقعے پر امریکی صدر نے خلیجی ریاستوں میں اتحاد اور خلیج کی وحدت کی ضرورت پر زور دیا۔

امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے مصری صدر السیسی کو ٹیلیفون سعودی عرب، متحدہ عرب امارات اور بحرین کی جانب سے دہشت گردی کی مشترکہ فہرست جاری کیے جانے کے بعد کیا۔ اس فہرست میں ان دہشت گرد افراد اور اداروں کے نام شامل ہیں جنہیں قطر کی بھرپور معاونت حاصل رہی ہے۔

قطر اور دوسرے خلیجی ملکوں کے درمیان پیدا ہونے والے تنازع کے بعد صدر ٹرمپ کا عرب رہ نماؤں سے یہ چوتھا رابطہ ہے۔ گذشتہ سوموار کو سعودی عرب، بحرین، متحدہ عرب امارات اور مصرنے قطر سے سفارتی تعلقات توڑ لیے تھے۔ خلیجی ممالک کا موقف ہے کہ قطر خطے کو عدم استحکام سے دوچارکرنے کے لیے دہشت گرد گروپوں اور شخصیات کی مدد کررہا ہے۔

امریکی عہدیدار نے راز داری کی شرط پر بتایا کہ ٹرمپ نے السیسی سے بات چیت میں خلیج کی وحدت کی ضرورت پر زور دیا مگر ساتھ ہی کہا کہ قطر کو اپنا رویہ ٹھیک کرنا ہوگا۔

ادھر مصری ایوان صدر کی جانب سے جاری کردہ ایک بیان میں بھی کہا گیا ہے کہ گذشتہ روز صدر السیسی اور ڈونلڈ ٹرمپ کے درمیان ٹیلیفون پر تبادلہ خیال ہوا ہے۔ بیان میں کہا گیا ہے کہ ٹیلیفون پر ہونے والی بات چیت میں دونوں رہ نماؤں نے دہشت گردی کے خلاف جاری جنگ، اور قطر کے حوالے سے بات چیت کی گئی۔ اس موقع پر السیسی نے امریکی صدر کی ریاض کانفرنس میں شرکت کی تحسین کی۔