.

جہازوں میں الکٹرونک آلات پر پابندی اسرائیلی ہیکروں کی کوشش کا نتیجہ ؟

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

امریکی اخبار نیویارک ٹائمز نے پیر کے روز بتایا ہے کہ اسرائیلی حکومت کے جاسوسوں نے داعش تنظیم میں بم تیار کرنے والوں کی کارروائیوں کو ہیک کر کے یہ انکشاف کیا کہ تنظیم کے ماہرین تجارتی جہازوں کو دھماکے سے اڑانے کے لیے ایسا بم تیار کر رہے جو لیپ ٹاپ کمپیوٹر کے اندر نصب کیا جا سکے۔

اخبار کے مطابق اسرائیلی جاسوس جو انفارمیشن ہیکرز ہیں.. انہوں نے کوڈز سے بھرپور معلوماتی کارروائیوں کے خلاف مغربی انٹیلی جنس اداروں کے حق میں نادر کامیابی حاصل کی۔

اخبار کا کہنا ہے کہ اسرائیلی ہیکروں نے چند ماہ قبل شام میں بم تیار کرنے والے ایک چھوٹے گروپ کی سرگرمیوں کو ہیک کیا۔ اس کوشش کے نتیجے میں 21 مارچ کو ترکی ، مشرق وسطی اور شمالی افریقہ کے درجنوں ہوائی اڈوں سے براہ راست امریکا آنے والی پروازوں میں لیپ ٹاپ اور حجم میں اسمارٹ فون سے بڑے دیگر الکٹرونک آلات ساتھ لے کر آںے پر پابندی عائد کر دی گئی۔

رپورٹ کے مطابق اسرائیلی ہیکروں کی کارروائی سے امریکا کو معلوم ہوا کہ داعش تنظیم لیپ ٹاپ کی بیٹری جیسے نظر آںے والے دھماکا خیز آلات تیار کر رہی ہے جن کے ذریعے ہوائی اڈوں پر اسکینروں اور دیگر تفتیشی اداروں کو دھوکا دیا جا سکتا ہے۔

امریکا کی جانب سے لیپ ٹاپ پر پابندی عائد کیے جانے کے بعد برطانیہ نے بھی چھ ممالک سے آنے والی پروازوں میں اس کی ممانعت کا اعلان کر ڈالا۔

لیپ ٹاپ کے حوالے سے انٹیلی جنس معلومات میں اسرائیلی ہیکروں کے کردار کا انکشاف امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے دس مئی کو وہائٹ ہاؤس میں روسی وزیر خارجہ سرگئی لاؤروف سے ملاقات کے دوران کیا۔

نیویارک ٹائمز کے مطابق ٹرمپ کے اس اقدام پر اسرائیلی ذمے داران کو سخت غصہ ہے۔