.

بحرینی فرمانروا کا دورہ امارات، خطے کی صورتحال پر بات چیت

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

خلیجی ریاست بحرین کے فرمانروا شاہ حمد بن عیسیٰ آل خلیفہ نے گذشتہ روز متحدہ عرب امارات کا دورہ کیا جہاں انہوں نے اماراتی قیادت سے خطے کی تازہ ترین صورت حال بالخصوص قطر کے ساتھ پیدا ہونے والے تنازع پر بات چیت کی۔

العربیہ ڈاٹ نیٹ کے مطابق بحرینی فرمانروا شاہ حمد بن عیسیٰ نے گذشتہ روز حاکم دبئی، نائب صدر اور وزیراعظم الشیخ محمد بن راشد آل مکتوم اور ابو ظہبی کے ولی عہد اور مسلح افواج کے ڈپٹی کمانڈر ان چیف الشیخ محمد بن زاید آل نھیان سے البطین شاہی محل میں ملاقات کی۔ اس موقع پر عجمان ریاست کی سپریم کونسل کے رکن الشیخ حمید بن راشد النعیمی اور دیگر اعلیٰ حکام بھی موجود تھے۔

اماراتی پریس ایجنسی ‘وام‘ کے مطابق بحرینی فرمانروا اور اماراتی قیادت کے درمیان ہونے والی بات چیت میں باہمی دلچسپی کے امور، بھائی چارے کے فروغ اور دو طرفہ تعلقات کو مزید مستحکم کرنے پر تفصیلی تبادلہ خیال کیا گیا۔

بحرینی فرمانروا گذشتہ روز ابو ظہبی پہنچے جہاں ہوائی اڈے پر ابو ظہبی کے ولی عہد الشیخ محمد بن زاید آل نھیان نے ان کا استقبال کیا۔

بعد ازاں انہوں نے متحدہ عرب امارات کے نائب صدر الشیخ محمد بن راشد آل مکتوم اور الشیخ محمد بن زاید آل نھیان سے مشترکہ ملاقات بھی کی۔

خیال رہے کہ بحرین کے فرمانروا شاہ حمد بن عیسیٰ آل خلیفہ نے متحدہ عرب امارات کا دورہ ایک ایسے وقت میں کیا ہے جب خلیجی ملکوں کےدرمیان سفارتی تنازع چل رہا ہے۔ سعودی عرب، متحدہ عرب امارات اور بحرین نے اپنے پڑوسے ملک قطر پر دہشت گردی کی مالی معاونت اور خطے کو عدم استحکام سے دوچار کرنے کی سازشوں کا الزام عاید کرنے کے بعد دوحہ کا سفارتی اور معاشی بائیکاٹ شروع کررکھا ہے۔

سعودی عرب، امارات، بحرین اور مصر نے ایسے59 مشتبہ دہشت گردوں اور 12 اداروں کی ایک فہرست بھی جاری ہے جنہیں مبینہ طور پر قطر کی طرف سے دہشت گردی کی کارروائیوں کے لیے معاونت ملتی رہی ہے۔