ایران: خواتین کے اسٹیڈیم میں میچ دیکھنے پر پابندی اٹھانے کا مطالبہ

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
1 منٹ read

ایران کی قومی فٹ بال ٹیم کے کپتان نے صدر حسن روحانی سے مطالبہ کیا ہے کہ وہ خواتین کے فٹ بال گراؤنڈ میں کھیل کے مقابلے دیکھے پر عاید پابندی اٹھائیں تاکہ خواتین تماشائیوں کو بھی براہ راست میچ دیکھنے کا موقع مل سکے۔

العربیہ ڈاٹ نیٹ کے مطابق ایرنی فٹ بال ٹیم کے کپتان مسعود شجاعی نے فارسی سپورٹس میگزین ’ورزش سہ‘ سے بات کرتے ہوئے کہا کہ خواتین تماشائیوں کو براہ راست اسٹیڈیم میں آکر میچ دیکھنے کا کوئی حل نکالا جانا چاہیے۔ میں صدرحسن روحانی پر زور دوں گا کہ وہ خواتین کے اسٹیڈیم میں میچ دیکھنے پر عاید پابندی اٹھائیں۔

کسی ایرانی فٹ بالر کی جانب سے یہ اپنی نوعیت کا منفرد بیان ہے۔ ایران میں کسی کھلاڑی کو خواتین کے میچ دیکھنے جیسے متنازع معاملے میں بات کرنے کی اجازت نہیں دی جاتی۔

خیال رہے کہ ایران میں سنہ 1979ء میں برپا ہونے والے انقلاب کے بعد بہت سے شعبوں میں خواتین کے حصہ لینے پر پابندیاں عاید ہیں۔ حکومت کی طرف سے کھیل کے میدانوں میں خواتین کے داخلے پر پابندی عاید کر رکھی ہے۔

حسن روحانی کا شمار ایران کے اعتدال پسند رہ نماؤں میں ہوتا ہے اور وہ ذاتی طور پر خواتین کے تماشائی کے طور پر کھیل کے میدانوں میں جانے کے خلاف نہیں۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں