.

پیرس میں ’دہشت گردی‘ کی کوشش ناکام، مشتبہ ڈرائیور ہلاک

ایک مشتبہ شخص نے کار پولیس گاڑی سے ٹکرا دی

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

فرانسیسی حکام کا کہنا ہے کہ کل سوموار کو دارالحکومت پیریس میں شاہراہ شانزے لیزے پر واقع ایوان صدر کے قریب ایک مشتبہ دہشت گرد نے اپنی کار پولیس کی گاڑی سے ٹکرا دی۔ پولیس نے فوری کارروائی کر کے مشتبہ حملہ آور کو ہلاک کردیا جب کہ اس کی کار سے دھماکہ خیز مواد برآمد کرنے کا بھی دعویٰ کیا گیا ہے۔

العربیہ ڈاٹ نیٹ کے مطابق فرانس کی انسداد دہشت گردی پولیس یونٹ کا کہنا ہے کہ اس نے پیرس میں ایوان صدر کے قریب پیش آئے اس واقعے کی تحقیقات شروع کردی ہیں۔ فرانسیسی وزیر داخلہ نے ایک بیان میں کہا ہے کہ شاہراہ شانزے لیزے پر پیش آنے والے واقعے میں استعمال ہونے والی کار سے دھماکہ خیز مواد برآمد کیا گیا ہے جب کہ کار ڈرائیور کو قتل کردیا گیا ہے۔

وزیر داخلہ کا کہنا ہے کہ ایوان صدر کے قریب گاڑیوں کا تصادم کوئی حادثہ نہیں بلکہ دہشت گردی کی کوشش تھی کیونکہ پولیس کو حملہ آور کی کار سے گیس سلینڈر، پستول اور’رینیومیگن‘ ماڈل کی ایک کلاشنکوف برآمد کی گئی ہے۔ پولیس کا کہنا ہے کہ کار ڈرائیور کی عمر 30 سال تھی اور وہ ایک کلاشنکوف بھی تھامے ہوئے تھا۔

فرانسیسی وزارت داخلہ کے ترجمان پییر اونرے برانڈیہ نے صحافیوں کو بتایا کہ بہ ظاہریہ ایک دانستہ کارروائی لگتی ہے۔ غالب امکان یہ ہے کہ ڈرائیور مسلح تھا جسے ہلاک کردیا گیا۔

’الحدث‘ ٹیلی ویژن کے نامہ نگار کے مطابق پولیس کی گاڑی سے کار کے تصادم کا واقعہ ایلزیہ محل کے قریب اس وقت پیش آیا جب کچھ ہی دیر بعد اردنی فرمانروا شاہ عبداللہ دوم اپنے سرکاری دورے پر پیرس پہنچنے والے تھے۔

قبل ازیں فرانسیسی پولیس نے ایک بیان میں بتایا تھا کہ وہ شاہراہ شانزے لیزے پر پیش آئے واقعے کی مختلف پہلوؤں پر تحقیقات کررہےہیں۔ پولیس نے واقعے کے بعد قریب واقع تھیٹر کی عمارت کو خالی کرالیا تھا۔ عینی شاہدین کا کہنا ہے کہ پولیس نے تھیٹر کی عمارت کو بھی گھیرے میں لے لیا تھا۔