ادلب میں کشیدگی میں کمی کے لیے ترکی اور روس متحد

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
1 منٹ read

شام کے شہر ادلب میں کشیدگی میں کمی کے لیے روس اور ترکی نے مشترکہ لائحہ عمل اپنانے کا فیصلہ کیا ہے۔

العربیہ ڈاٹ نیٹ کے مطابق ترک صدر رجب طیب ایردوآن کے ترجمان نے ایک ٹی وی انٹرویو میں بتایا کہ ان کا ملک شام کے علاقے ادلب میں کشیدگی میں کمی کے لیے روس کے ساتھ مل کر کام کرے گا۔

’خبر ترک‘ ٹیلی ویژن سے بات کرتے ہوئے ایوان صدر کے ترجمان ابراہیم کالین نے کہا کہ ادلب میں کشیدگی سے محفوظ علاقوں کا قیام ترکی کی اولین ترجیح ہے۔ اس حوالے سے آئندہ ماہ قزاقستان کے صدر مقام آستانہ میں ہونے والے مذاکرات میں ترکی، ایران اور روس کے درمیان زیربحث لایا جائے گا۔

ایک سوال کے جواب میں مسٹر کالین کا کہنا تھا کہ انقرہ ادلب میں ماسکو کے ساتھ پوری قوت سے موجود رہے گا۔ دمشق میں روس اور ایران کا غلبہ اور جنوبی شام میں درعا کے علاقوں پر اردن اور امریکا مشترکہ لائحہ عمل اختیار کرنے کی تیاری کررہے ہیں۔ ترجمان نے بتایا کہ روس نے قزاقستان اور قرغیزستان کی فوج بھیجنے کی تجویز بھی پیش کی ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں